مولانا فضل الرحمان اسلام آباد میں ہونگے اور میں پورے ملک کا دورہ کروں گا،بلاول

مولانا فضل الرحمان اسلام آباد میں ہونگے اور میں پورے ملک کا دورہ کروں گا،بلاول
image by facebook

جامشورو: پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے ‏جمیعت علمائے اسلام ف کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کے اسلام آباد مارچ اور لاک ڈاؤن کی حمایت کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ اسلام آباد میں ہوں گے جبکہ میں ملک کا دورہ کروں گا۔ 


جامشورو میں ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے گفتگو میں انہوں نے کہا کہ حکومت غیر جمہوری رویے اپنا رہی ہے، پاکستان ایک خاندان کی طرح ہے، ہم اس خاندان کو قائم و دائم رکھیں گے،  پیپلزپارٹی نے ہر دور میں آمر کا مقابلہ کیاہےاورموجودہ حکومت کے آمرانہ ہتھکنڈوں کا مقابلہ بھی کرینگے۔

چیئرمین پاکستان پیپلزپارٹی نے کہا کہ کشمیرکازپرکوئی سمجھوتہ نہیں ہونےدیں گےاور نہ ہی کشمیرکازپرکوئی پاکستانی کوتاہی برداشت نہیں کرےگا ، بھٹو شہید نے کہا تھا نیند میں بھی کشمیرپرغلطی نہیں کرسکتا۔ مسئلہ کشمیر،سلیکٹڈنمائندےغلطی پرغلطی کررہےہیں۔

انہوں نے کہا کہ پورے کشمیرکوجیل میں تبدیل کردیاگیا ہے، ہماری حکومت ہوتی تووزیراعظم پورےملک کاوزیراعظم ہوتااورہماراوزیراعظم کشمیریوں کی آوازدنیاتک پہنچاتا۔بلاول بھٹو نے کہا  کہ سلیکٹڈحکومت میں یہ اہلیت نہیں کہ وہ ملکی معیشت سنبھال سکے، وزیراعظم ہر اعلان پریوٹرن لےلیتےہیں، اس لئے اس حکومت کا کوئی بھی اعتبار کرنے کو تیار نہیں ہے۔

سیاسی تجزیہ کاروں کے مطابق بلاول بھٹو زرداری کے اس اعلان سے تاثر ملتا ہے کہ انہوں نے اسلام آباد لاک ڈاؤن میں شرکت نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے ، اسی لئے انہوں نے ملک بھر میں جلسوں سے خطاب کی بات کی ہے۔

ادھر لاہور میں پاکستان پیپلزپارٹی کے رہنماؤں قمر زمان کائرہ اور چوہدری منظور احمد نے فریال تالپور اور آصف زرداری کے پروڈکشن آرڈرز جاری نہ کرنے اور ان کے ساتھ ہونے والے امتیازی سلوک کے خلاف پریس کانفرنس کی ہے , چوہدری منظور نے پریس کانفرنس سے خطاب میں کہا کہ ملک میں آئینی بحران پیدا ہو چکا ہے۔ ایک حکومت دوسرے صوبے کی اسمبلی کے سامنے کھڑی ہو گئی ہے۔ وزیراعلی خط لکھ رہے ہیں اور حکومت اسمبلی کے پروڈکشن آرڈر پر عمل نہیں کر رہے۔

انہوں نے کہا کہ سندھ والے یہ بات کرتے تو ان پر غداری کے الزامات لگتے اس لئے ہم پنجاب سے بات کر رہے ہیں۔ راولپنڈی سے بھٹو اور بینظیر کی لاشیں سندھ گئیں، یہ کرنا کیا چاہ رہے ہیں؟ خدا نہ کرے راولپنڈی میں کچھ ہوا تو یہ ملک اس کا متحمل نہیں ہوگا۔چوہدری منظور احمد نے کہا کہ آپ اس آصف زرداری کے ساتھ یہ کر رہے ہیں جس نے بی بی کی شہادت پر پاکستان کھپے کا نعرہ لگایا تھا؟

قمر زمان کائرہ نے اس موقع پر کہا کہ مولانا صاحب نے اپنے طور پر اسلام آباد لاک ڈاؤن کا  فیصلہ کیا ہے ،ہم ان کے مارچ کے بارے میں اجلاس میں فیصلہ کریں گے۔ ہم اے پی سی کے فیصلوں کے پابند ہیں جو فیصلہ اے پی سی میں ہوگا اس پر عمل ہوگا۔