'طاقت کے ذریعے مسئلے کا حل ممکن نہیں'، 'افغانستان میں پائیدار امن سب کی خواہش ہے'

'طاقت کے ذریعے مسئلے کا حل ممکن نہیں'، 'افغانستان میں پائیدار امن سب کی خواہش ہے'
کیپشن:   افغانستان کے مستقبل کا فیصلہ وہاں کے عوام نے کرنا ہے، شاہ محمود قریشی۔۔۔۔۔۔۔۔فائل فوٹو

اسلام آباد: وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ افغانستان میں پائیدار امن سب کی خواہش ہے اور طاقت کے ذریعے مسئلے کا حل ممکن نہیں، پاکستان مصالحانہ کردار ادا کرتا رہے گا اور عالمی برادری افغان عمل مذاکرات کی حمایت جاری رکھے۔

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے دوحہ میں بین الافغان مذاکرات سے ویڈیو لنک کے ذریعے خطاب کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ پاکستان نے افغانستان میں امن کیلئے اپنا بھرپور کردار ادا کیا، بین الافغان مذاکرات کا آغاز ہماری مشترکہ کوششوں کا نتیجہ ہے، افغانستان کے مستقبل کا فیصلہ وہاں کے عوام نے کرنا ہے، ہمیشہ موقف رہا کہ افغان مسئلے کا طاقت سے حل ممکن نہیں۔

امریکی وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ افغانستان کی تعمیر و ترقی کیلئے شراکت داری کو مزید مضبوط کرنا چاہتے ہیں اور تمام فریقین امن کے قیام کیلئے اس موقع سے فائدہ اٹھائیں۔

نارویجن وزیر خارجہ نے کہا کہ افغانستان میں امن و استحکام خطے کیلئے بہت اہمیت کا حامل ہے اور ہمیں بین الافغان مذاکرات سے بہت امیدیں وابستہ ہیں، توقع ہے فریقین افغان عوام کے حقوق یقینی بنانے کیلئے آگے بڑھیں گے۔

افغان امن کمیٹی کے سربراہ ڈاکٹرعبداللہ عبداللہ کا کہنا تھا کہ مل کر افغان عوام کے روشن مستقبل کیلئے راہ متعین کرنی ہے، تشدد کے خاتمے اور عوامی حقوق یقینی بنا کر افغان عوام کو خوشیاں دینی ہیں۔

چینی وزیر خارجہ وانگ ژی نے کہا کہ افغان مسئلے کے سیاسی حل کیلئے اس موقع سے فائدہ اٹھانا ہوگا، پائیدار امن کا خواب مفاہمتی عمل سے ہی ممکن ہے۔