بنگلور میں توہین رسالت کے واقعے نے مسلمانوں کے جذبات کومجروح کیا، شاہ محمود قریشی

بنگلور میں توہین رسالت کے واقعے نے مسلمانوں کے جذبات کومجروح کیا، شاہ محمود قریشی

اسلام آباد:وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ بھارتی شہر بنگلور میں توہین رسالت کے واقعے نے مسلمانوں کے جذبات کومجروح کیا ہے، عالمی تنظیموں کو اس کا نوٹس لینا چاہیے، بی جے پی حکومت نے سیکیولر سٹیٹ کو دفن کردیا ہے اور اب بھارت میں ایک ہندو اسٹیٹ جنم لے رہی ہے۔


بھارت کے شہر بنگلور میں ہونے والے دل خراش واقعے کے حوالے سے جمعرات کو ایک بیان میں وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ توہین رسالت کے اس واقعے نے مسلمانوں کے جذبات کومجروح کیاہے، اس وڈیو کو پوری امت مسلمہ کودیکھنا چاہیے۔انڈیا میں آج مسلمان اقلیت محفوظ نہیں ہے۔ مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا کہ مسجد کوشہید کرکے مندر بنانا قطعی طور پر درست نہیں۔

جذبات بھی مسلمانوں کے مجروح کرتے ہیں اور شہادتیں بھی مسلمانوں کی ہوتی ہیں۔ وزیر خارجہ نے کہا کہ مسلمانوں کو ہی گرفتار کیا گیا۔ وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ ہیومین رائٹس واچ، ایمنیسٹی انٹرنیشنل اور دیگر انسانی حقوق کی عالمی تنظیموں کو اس کا نوٹس لینا چاہیے۔انہوں نے کہا کہ سیکیولرسٹیٹ کو تو بھارت کی اس حکومت نے دفن کردیا ہے،آج بھارت میں ایک ہندو سٹیٹ جنم لے رہی ہے۔یہ اندرونی مسئلہ نہیں ہے یہ انسانیت کا مسئلہ ہے۔

پاکستان کو حق حاصل ہے کہ اس معاملے کو اٹھائے، مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا کہ ہم نے کل بھارتی ہائی کمیشن کے حکام کے ساتھ اس معاملے کو اٹھایا اور پاکستان کی طرف سے ردعمل کا اظہار کیا۔ ہم ہر انٹرنیشنل فورم پر اسلاموفوبیا کے مسئلے کو اٹھارہے ہیں۔ وزیرخارجہ نے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان کی جنرل اسمبلی کے گذشتہ اجلاس میں کی گئی تقریر میں بڑھتے ہوئے اسلامو فوبیا کا تذکرہ موجود ہے۔جنرل اسمبلی کے نو منتخب صدرکے سامنے میں نے یہ ایشو اٹھایا۔