مسلم لیگ ن ان ہاؤس تبدیلی پر تیار

مسلم لیگ ن ان ہاؤس تبدیلی پر تیار
کیپشن:   مسلم لیگ ن ان ہاؤس تبدیلی پر تیار سورس:   فائل فوٹو

اسلام آباد : مسلم لیگ ن نے ان ہاؤس تبدیلی کے حوالے سے اہم فیصلہ کرلیا ہے۔ سابق صدر آصف علی زرداری اور سابق وزیراعظم نواز شریف کے درمیان ایک اور ٹیلی فورنک رابطہ ہوا ہے جس کے بعد مسلم لیگ ن وزیراعظم عمران خان کے خلاف تحریک عدم اعتماد لانے کیلئے رضا مند ہوگئی ہے۔

ذرائع کے مطابق حکومت مخالف اپوزیشن جماعتوں کا حکومت کو گرانے کی ہر آپشن استعمال کرنے پر مکمل اتفاق ہوگیا ہے۔ پیپلزپارٹی اور مسلم لیگ ن کا اتحاد ہر صورت برقرار رکھنے پر اتفاق ہوا ہے۔

پیپلز پارٹی کے مطابق سابق صدر آصف علی زرداری ان ہاوس تبدیلی پر پراعتماد ہیں۔ سابق صدر آصف علی زرداری نے ان ہاوس تبدیلی کے لیے نواز شریف کو قائل کرلیا۔ ن لیگ نے پیپلزپارٹی کی ان ہائوس تبدیلی کی مکمل حمایت کرنے کاعندیہ دیدیا ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ پی ڈی ایم ان ہائوس تبدیلی ، استعفوں، لانگ مارچ اور دھرنے کا آپشن استعمال کرے گی۔ سینیٹ الیکشن کے فوری بعد پی ڈی ایم کی قیادت ان آپشنز پر غور کےلئے سر جوڑے گی۔ پیپلز پارٹی لانگ مارچ سے قبل ان ہاؤس تبدیلی کا آپشن استعمال کرےگی۔ 

اگر پیپلز پارٹی ان ہائوس تبدیلی کے لیے نمبر گیم پوری کرلیتی ہے تو پی ڈی ایم حمایت کرے گی جبکہ دونوں رہنماؤں نے حکومت پر مسلسل مزید دباؤ بڑھانے کے لیے تحریک انصاف کے ناراض رہنماؤں سے بھی رابطوں کا فیصلہ کرلیاگیا۔

ذرائع کے مطابق پیپلزپارٹی نے استعفوں کے آپشن پر مکمل رضا مندی کا اظہار کر دیا ہے جبکہ ان ہائوس تبدیلی کے آپشن کی ناکامی کی صورت میں پیپلزپارٹی کی استعفوں کے آپشن پر مشروط آمادگی ظاہر کر دی ہے۔