جمہوریت میں اہم ہے ہم کسی کام میں دخل اندازی نہ کریں، چیف جسٹس پاکستان

جمہوریت میں اہم ہے ہم کسی کام میں دخل اندازی نہ کریں، چیف جسٹس پاکستان

کراچی میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ بخوبی اندازہ ہے جتنے بھی زیر التوا کیس ہیں اتنے وسائل نہیں۔انہوں نے کہا کہ ایک کوشش کی جاسکتی کہ اسی قانونی دائرے اور ان ہی ججز کی تعداد کی ساتھ ہر جگہ قانون کے مطابق جلد کام کریں۔


چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ لوگوں کو شکایت ہےکہ جلد انصاف نہیں ملتا۔انصاف میں تاخیر ایک بہت بڑا مسئلہ ہےلیکن یہ صرف پاکستان ہی نہیں بلکہ دنیا بھرمیں شکایات رہتی ہیں کہ مقدمات میں تاخیر ہوتی ہے۔انہوں نے کہا کہ مجھے سب سے اچھا کام پنجاب میں نظر آیا ہے۔پنجاب میں ماڈل کورٹس بنائی گئی ہیں۔

معزز چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ کیس جب سپریم کورٹ میں آتا ہے توپتا چلتا ہے وہ بے گناہ ہیں، جیل میں ایک سال گزارنا بھی مشکل ہے، جنہوں نے کئی سال جیلوں میں گزارے ان کا کیا کریں۔

ان کا کہنا تھا کہ کیس میں تاخیر کا الزام آخر کار عدلیہ پرہی آتا ہے، جج ان مقدمات کو نمٹا نہیں سکا تو کیا قصور وار ہے، کیا ڈسٹرکٹ اورسول جج کام نہیں کررہے؟جسٹس میاں ثاقب نثار نے کہا کہ جمہوریت میں اہم ہے ہم کسی کام میں دخل اندازی نہ کریں، کیا قوانین کوپارلیمنٹ سے اپڈیٹ کیا گیا ہے؟ کسی کومورد الزام نہیں ٹھہرارہا۔چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ ہم کس دور میں جی رہے ہیں؟ پنجاب کے علاوہ پاکستان میں کہیں بھی معیاری فرانزک لیب نظرنہیں آئی، کروڑوں روپے کی پراپرٹی زبانی طور پر ٹرانسفر کردی جاتی ہے۔