منفی پروپیگنڈا کرنیوالے میرا ٹرائل قذافی اسٹیڈیم میں کریں، جسٹس شوکت عزیز صدیقی

منفی پروپیگنڈا کرنیوالے میرا ٹرائل قذافی اسٹیڈیم میں کریں، جسٹس شوکت عزیز صدیقی

اسلام آباد: سوشل میڈیا پرگستاخانہ مواد کی تشہیر کیخلاف مقدمے کی سماعت ہوئی۔ ڈائریکٹر ایف آئی اے نے اسلام آباد ہائیکورٹ کو بتایا کہ تحقیقات ابھی جاری ہیں۔ فیس بک کی انتظامیہ کو متنازعہ پیجز بلاک کرنے کی درخواست دیدی ہے۔ جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے ریمارکس دیئے کہ کسی بے گناہ پر الزام نہیں لگنا چاہئے۔ انہوں نے ہدایت کی ایف آئی آر میں جو لوگ نامزد ہیں وہ پاکستان سے بھاگنے نہ پائیں۔


جسٹس شوکت عزیز صدیقی کا کہنا تھا کہ علماء کرام، صحافی اور سول سوسائٹی ان کے حق میں سوشل میڈیا پر کسی قسم کی کوئی مہم نہ چلائے، کوئی انہیں موذن کہے یا خطیب اس سے کوئی فرق نہیں پڑتا۔ ہم نے حلف اٹھایا ہے کہ میں قانون اور انصاف کے مطابق فیصلہ کریں گے۔

انہوں نے ریمارکس دیئے کہ منفی پروپیگنڈا کرنے والے اپنا کام جاری رکھیں بلکہ ان کا ٹرائل قذافی اسٹیڈیم میں کریں۔ آخری فیصلہ لکھنے کیلئے علما، صحافیوں، وکلا اور نقادوں سے بھی رائے لی جائے گی۔ فیصلے میں تحریر ہو گا کہ اینکرز اور ٹی وی چینلز آرٹیکل 19 پر عمل کرنے کے پابند ہوں گے۔ مقدمے کی سماعت 17 مارچ کو پھر ہو گی۔

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں