ممبئی: بھارت جانے والے پاکستانی بھی اب غیر محفوظ ہو گئے۔ بھارتی میڈیا کے مطابق دو ہفتے پہلے 26 پاکستانی بھارت کے شہر ممبئی پہنچے اور اچانک ہی لاپتہ ہو گئے۔ بھارت نے روایتی انداز میں پاکستانیوں کے خلاف تعصب کا مظاہرہ کرتے ہوئے کوئی کارروائی نہیں کی تاہم سماجی میڈیا پر پاکستانیوں کی گمشدگی کی آواز اٹھی تو بھارتی ایجنسیز اور پولیس کو ہوش آ گیا۔

بھارتی فورسز نے لاپتہ پاکستانیوں کی تلاش کی بجائے الٹا انہیں لوگوں پر  الزام دھر دیا کہ ان تمام افراد نے ممبئی آتے ہی بنیادی فارم سی نہیں پُر کیا تھا جس میں اپنے حوالے سے معلومات دی جاتی ہے کہ وہ بھارت میں کس سے ملنے اور کس مقصد کے لئے آئے ہیں۔

بھارتی میڈیا کے مطابق پولیس شہر کے مختلف علاقوں میں سرچ آپریشن کر رہی ہے لیکن تاحال  کوئی کامیابی نہیں ملی۔

یاد رہے لاپتہ ہونیوالے پاکستانی کرنل حبیب ظاہر کے اغوا کے تانے بانے بھی بھارت سے جا ملے تھے۔ کرنل حبیب ظاہر کی گمشدگی کے حوالے سے انکشاف ہوا تھا کہ انہیں ریسیو کرنے کے لیے بھارتی شہری ڈولی رینچل 4 اپریل کو نیپالی شہر لمبینی پہنچا اور دد دن وہاں ٹھہرا۔ انہیں لینے کے لیے گاڑی بھی ساڑھے گیارہ بجے سے نیپالی ہوائی اڈے کی پارکنگ میں موجود تھی جبکہ حبیب ظاہر کی ہوٹل اور ٹکٹ کی ادائیگی میں بھی بھارتی شہریوں کے نام سامنے آئے ہیں۔لمبینی شہر بھارت کی سرحد کے بالکل قریب ہے اور وہاں بارڈ کراس کرنا بھی انتہائی آسان ہے۔

ذرائع نے مزید انکشاف کیا تھا کہ حبیب ظاہر کو ایئر پورٹ سے ٹویوٹا میک گاڑی کے ذریعے بھارتی بارڈر کی جانب لے جایا گیا۔ ان کے سم کارڈ پر آخری سگنل لمبینی میں مایا دیوی مندر کے قریب موصول ہوئے تھے۔

حبیب ظاہر کو ملازمت کی پیشکش بھی بھارت سے ہوسٹ ہونے والی ویب سائٹ کے ذریعے دی گئی تھی۔

 

 

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں