کرنسی نوٹ واپس لینے کے منصوبے کو خفیہ رکھنا ضروری تھا: مودی

کرنسی نوٹ واپس لینے کے منصوبے کو خفیہ رکھنا ضروری تھا: مودی

نئی دہلی : بھارتی  وزیر اعظم مودی نے کہا کہ زیادہ مالیت کے کرنسی نوٹ کو واپس لینے کے منصوبے کو راز رکھنا ضروری تھا۔


بدعنوانی کے خلاف اٹھائے جانے والے اس قدم کا آغاز چار روز قبل ہوا تھا لیکن اس کے بعد سے اب تک بینکوں اور اے ٹی ایم مشین کے سامنے لمبی قطاریں نظر آ رہی ہیں۔

برطانوی نشریاتی ادارے کے  مطابق  اتوار کو صبح سے ہی تمام بینکوں کے سامنے قطاریں لگی ہوئی ہیں جو کہ گذشتہ روز کے مقابلے میں کہیں زیادہ لمبی ہیں۔ بہت سے لوگ پرانے کرنسی نوٹ بدلوانے کے لیے قطار میں ہیں تو بہت سے روز مرہ کی ضرورت کے لیے پیسے نکالنے کے لیے انتظار میں ہیں۔

وزیر اعظم مودی نے کہا کہ اسے اچانک کیا جانا تھا لیکن میں نے کبھی یہ نہیں سوچا تھا کہ اس کے لیے مجھے دعائیں ملیں ۔انھوں نے یہ عندیہ بھی دیا کہ کالے دھن اور بدعنوانی کے خلاف لڑائی کے لیے مزید طریقے اپنائے جا سکتے ہیں۔

وزیر خزانہ ارون جیٹلی نے لوگوں سے صبر کی تلقین کی اور کہا کہ چند ہفتے میں پرانے کرنسی نوٹ پوری طرح سے بدل دیے جائیں گے۔ کہا جاتا ہے کہ کالعدم قرار دیے جانے والے کرنسی نوٹ مجموعی کرنسی نوٹ کا 85 فیصد تھے۔ ارون جیٹلی نے کہا کہ ملک بھر سے اب تک 30 ارب پرانے کرنسی نوٹ بینک میں جمع کیے جا چکے ہیں۔