سعودی محکمہ ٹریفک نے ڈرائیونگ لائسنس کے لئے فوری امتحان کا نظام ختم کردیا

سعودی عرب میں ڈرائیونگ کے لیے امتحان ختم،نئے طریقہ کار پر غیر ملکی شہری خوشی سے نہال

ریاض: سعودی  عرب کے محکمہ ٹریفک نے ڈرائیونگ لائسنس کے لئے فوری امتحان کا نظام ختم کردیا۔ ڈائریکٹر بریگیڈیئر محمد عبداللہ البسامی نے یہ اعلان کرتے ہوئے واضح کیا کہ جو لوگ ڈرائیونگ لائسنس حاصل کرنا چاہئیں گے ان کا فوری امتحان نہیں لیا جائے گا بلکہ انہیں تربیتی کورس کرایا جائے گا۔

البسامی نے مزید کہا کہ اچھی ڈرائیونگ نہ کرنے والے سعودی شہریوں اور مقیم غیر ملکیوں کو لائسنس کی درخواست دینے پر 90 گھنٹے کا تربیتی کورس کرنا ہوگا۔ نئی غیر متوقع تبدیلی سے اچھی ڈرائیونگ کرنے والے مستثنیٰ نہیں ہونگے۔ انہیں 30 گھنٹے کا تربیتی کورس کرناہوگا۔ البسامی کا کہنا ہے کہ ڈرائیونگ لائسنس کے خواہشمند ایسے افراد کیلئے 120 گھنٹے کا تربیتی کورس مقرر کیاگیا ہے جو ڈرائیونگ سے قطعاً ناواقف ہونگے۔ دوسری جانب باخبر ذرائع نے تواصل ویب سائٹ سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ڈرائیونگ اسکولوں کے مالکان نے محکمہ ٹریفک سے تربیتی فیس میں ترمیم کی درخواست کی ہے۔ مالکان کا کہنا ہے کہ جب تک فیسوں میں اضافہ نہیں ہوگا تب تک ڈرائیونگ اسکولوں کامعیار بہتر نہیں ہوگا۔ جدید تعلیمی و تربیتی وسائل بجٹ کی فراہمی پر ہی مہیا کئے جاسکیں گے۔

ذرائع نے الوطن اخبار سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اسکولوں کے مالکان نے فیسوں میں اضافے کی تجویز ایسے وقت میں پیش کی ہے جبکہ 10 شوال 1439 ھ سے خواتین کو ڈرائیونگ اسکولوں سے رجوع کرنے کی اجازت دے دی گئی ہے۔ مجوزہ فیس فی گھنٹے کے اعتبار سے ہوگی۔ 60 تا 70 ریال فیس مقرر کئے جانے کا امکان ہے۔ خواتین کو ڈرائیونگ کی اجازت ملنے کے تناظر میں 50 فیصد تک غیر ملکی ڈرائیوروں سے چھٹکارہ حاصل کرنے کی توقعات پائی جاتی ہیں۔