بٹ کوائن نے پہلی دفعہ چار ہزار ڈالر کی حد کو عبور کر لیا

بٹ کوائن نے پہلی دفعہ چار ہزار ڈالر کی حد کو عبور کر لیا

لندن :دنیا میں سب سے زیادہ استعمال ہونے والی سائبر کرنسی بٹ کوائن نے پہلی دفعہ پانچ ہزار ڈالرز کی حد کو عبور کرلیا ہے۔


اس سے قبل اگست میں اس نے چار ہزار ڈالرز کی حد کو عبور کیا تھا مگر اس کے بعد اس کی قیمت میں کمی دیکھنے میں آئی، جس کی وجہ چین کی جانب سے ورچوئل کرنسیوں کے خلاف کریک ڈائون کا اعلان اور روس کا ایسا عندیہ تھا۔تاہم اب وہ ایک بار پھر اس کی قیمت میں تیزی سے اضافہ ہورہا ہے اور اس کرنسی کے ایک یونٹ یا یوں کہہ لیں کہ ایک روپے کی قیمت 5200 (لگ بھگ ساڑھے پانچ لاکھ پاکستانی روپے) تک پہنچ چکی ہے۔یعنی آپ ایک بٹ کوائن سے 113 گرام دس تولے سے زیادہ سونا خرید سکتے ہیں۔

واضح رہے کہ بٹ کوائن کا استعمال اشیاء اور سروسز کو ادائیگی کے حوالے سے لوگوں کو بینکوں اور ادائیگی کے روایتی پراسیس کو بائی پاس کرنے کا موقع فراہم کرتا ہے۔بٹ کوائن اور دیگر ایسی ہی ورچوئل کرنسیوں کی قیمتوں میں تیزی سے اضافہ ان خدشات کے باوجود تھم نہیں سکا کہ یہ قیمتیں اچانک زمین پر بھی گرسکتی ہیں۔

دلچسپ بات یہ ہے کہ رواں سال کے آغاز میں اس کرنسی کی قیمت صرف 966 ڈالرز تھی اور ایک سال کے دوران اس کی قیمت میں 750 فیصد اضافہ ہوا ہے۔ماہرین کے مطابق بٹ کوائن کی سکیل ایبلیٹی اور ٹرانزیکشن کے لیے تیز پراسیس نے اس کی قیمت میں نمایاں اضافے میں کردار ادا کیا ہے۔