موٹروے زیادتی کیس، ملزم وقار الحسن پولیس کے سامنے پیش ،صحت جرم سے انکار

موٹروے زیادتی کیس، ملزم وقار الحسن پولیس کے سامنے پیش ،صحت جرم سے انکار

لاہور: گجرپورہ موٹر وے خاتون زیادتی کیس میں اہم موڑ,خاتون زیادتی کیس میں ملزم  وقار الحسن ماڈل ٹاؤن سی آئی اے پیش ہو گیا.


نیوز نیوز کے مطابق موٹروے زیادتی کیس کا مرکزی ملزم عابد علی کا ساتھی ملزم وقار الحسن سی آئی اے ماڈل ٹاؤن پولیس سٹیشن لاہور میں پیش ہوا جہاں اس نے صحت جرم سے انکار کر دیا۔

پولیس ذرائع کے مطابق ملزم نے پریس کانفرنس میں اپنے جرم سے انکار کیا اور پولیس کو اپنا بیان ریکارڈ کرادیا,ملزم نے کہا کہ اس جرم میں ملوث نہیں  مجھ پر الزام لگایا جارہا ہے،اپنی بے گناہی ثابت کرنے کیلئے خود پیش ہوا،میراز زیادتی واقعہ سے کوئی تعلق نہیں ہے۔

یاد رہے کہ پنجاب حکومت کی جانب سے ملزمان کی اطلاع دینے پر 25 لاکھ روپے دینے کا اعلان کیا تھا۔جمعرات کو موٹروے پر خاتون کو اس کے بچوں کے سامنے زیادتی کا نشانہ بنایا گیا تھا۔ موٹروے پر خاتون کی گاڑی میں پیٹرول ختم ہو گیا تھا اور خاتون نے گاڑی کو اندر سے لاک کر رکھا تھا تاہم ملزمان نے موقع پر پہنچ کر گاڑی کا شیشہ توڑا۔

ملزمان نے خاتون کو اس کے بچوں سمیت جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا تھا۔ خاتون کی میڈیکل رپورٹ میں جنسی زیادتی ثابت ہو گئی تھی۔

موٹروے پر ہونے والے واقعے کے بعد پولیس نے ملزمان کی تلاش شروع کر دی تھی۔ ملزمان کی گرفتاری کے لیے پولیس کی 28 ٹیمیں تشکیل دی گئیں جو ملزمان کی تلاش کے لیے مختلف مقامات پر چھاپے مار رہی ہیں۔

موٹروے زیادتی کیس میں ملزمان کی شناخت سائنسی طریقے سے عمل میں آئی۔ آئی جی پنجاب کے مطابق ملزم عابد علی نے اپنی تمام موبائل فون سمز بند کر دی تھیں اور وہ کسی اور کا نمبر استعمال کر رہا تھا۔

انہوں نے کہا کہ پولیس کی ٹیمیں دونوں ملزمان کی تلاش میں لگی ہوئی ہیں۔ جیو فینسنگ سے ملزمان کی جائے واردات پر موجودگی ثابت ہوتی ہے۔