عمران نیازی کے ہر اقدام سے انتقام کی بوآتی ہے، حمزہ شہباز

عمران نیازی کے ہر اقدام سے انتقام کی بوآتی ہے، حمزہ شہباز
فوٹو فائل

لاہور:عمران خان کی حکومت یوٹرن کی سنچری مکمل کرے گی ، پی ٹی آئی کے وزراء طوطا مینا کی کہانیاں سناتے ہیں اور عمران خان کو علیمہ خان کی منی ٹریل سامنے لانے ہو گی ۔


اپوزیشن لیڈر پنجاب اسمبلی حمزہ شہباز نےلاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے عمران خان اور ان کی حکومت کو کڑی تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ عمران خان کی حکومت نے پاکستانی عوام پر مہنگائی کابم گرا دیا ہے ۔نیاز ی صاحب ہوش کریں بڑھکیں مارنے سے ملک نہیں چلتا،یہ کھیل کا میدان ہے نہ گیند بلے کاکھیل ،یہاں پر آپ کو عوام کو ریلیف دینا ہے۔اس طرح پاکستان نہیں چلے گا۔پاکستانی قوم آپ سے جواب لے کر رہے گی۔انہوں نے کہا کہ علیمہ خان کی جائیدادیں اب نیو جرسی میں نکلی ہیں۔ علیمہ خان کی منی ٹریل لانی ہو گی پہلے آپ کی زبان نہیں تھکتی تھی کہ نواز شریف منی ٹریل لائیں۔اب یہ مکافات عمل ہے گھر کی بات سامنے لانی ہوگی۔ 

اپوزیشن لیڈر پنجاب اسمبلی حمزہ شہباز نے کہا کہ اپوزیشن کیلیے ایک پاکستان اورنیازی صاحب کے احتساب کے معاملے پر دوسرا پاکستان ہے ۔سرکاری بینچوں پر بیٹھنےوالوں کیلیے کوئی ای سی ایل نہیں ،یہ دہرا معیار ہے۔انہوں نے کہا کہ عمران نیازی کے ہر اقدام سے انتقام کی بوآتی ہے۔عمران نیازی کا اپنادامن داغدار ہے وہ اپوزیشن کیخلاف کس منہ سےچور ڈاکوکےنعرےلگاتے ہیں۔ملک میں احتساب کا دوہرا معیار ہے۔

  

اپوزیشن لیڈر  پنجاب اسمبلی نے کہا کہ مشرف کا دس سال کا ڈکٹیٹر شپ کادور بھی دیکھا۔وہ دن آنے والا ہے جب نیازی صاحب دوبارہ کنٹینر پر چڑھیں گے ۔عمران نیازی کنٹینر پر چڑھ کر عوام سےمعافی مانگیں گےکہ جھوٹ بولتا تھا۔انہوں نے کہا کہ آپ کوہیلی کاپٹر کیس کا جواب دینا ہوگا۔حمزہ شہباز نے کہا کہ یہی پی ٹی آئی طعنے دیتی تھی ایم پیز کو فنڈ نہیں دیں گے ،آج بڑا یو ٹرن ہے۔پنجاب میں معاملات جو ں کے توں ہیں ،لوکل باڈیز کو فنڈ نہیں مل رہے۔

حمزہ شہباز نے کہا کہ شریف خاندان کےخلاف ایک پیسا کرپشن ثابت نہیں کر سکے ۔ہمار دامن آج بھی صاف ہے ۔انہوں نے کہا کہ آج ایوان میں مفادات کے تنازع پر بل آرہا ہے۔آپ کے وزیر مہمند ڈیم میں حصہ دار ہیں یہ مفادات کا تنازع نہیں تو کیا ہے۔حمزہ شہباز نے کہا کہ قبلہ درست کرناہے تو اپوزیشن آپ کا ساتھ دینے کو تیار ہےلیکن آپ کےجو لچھن ہیں،آپ کی قابلیت ہےنہ اہلیت کوئی عملی قدم نہیں اٹھایا۔