تحریک انصاف کو بلے کا انتخابی نشان دوبارہ الاٹ ہو گیا

اسلام آباد: الیکشن کمیشن نے تحریک اںصاف کی انٹرا پارٹی انتخابات کی تفصیلات کو درست قرار دیتے ہوئے انتخابی نشان بلے دوبارہ بحال کر دیا۔ یاد رہے کہ عوامی نمائندگی ایکٹ کے تحت انٹرا پارٹی انتخابات کی تفصیلات الیکشن کمیشن میں جمع کرانا لازمی قرار دیا گیا ہے۔ اگر انٹرا پارٹی انتخابات کی تفصیلات الیکشن کمیشن میں جمع نہ کرائی جائیں تو انتخابی نشان الاٹ نہیں ہوتا۔ واضح رہے کہ انٹرا پارٹی انتخابات نہ کرانے پر الیکشن کمیشن نے تحریک انصاف کا انتخابی نشان روک رکھا تھا۔

الیکشن کمیشن میں جمع کرائی گئی پی ٹی آئی کی دستاویزات کے مطابق عمران خان چیئرمین جبکہ شاہ محمود قریشی وائس چیئرمین کے عہدوں پر برقرار ہیں۔ اس کے علاوہ جہانگیر ترین پارٹی کے سیکرٹری جنرل، عارف علوی پی ٹی آئی سندھ کے صدر، یار محمد رند بلوچستان کے صدر، علیم خان صدر وسطی پنجاب اور علی امین گنڈا پور صدر خیبرپختونخوا ساؤتھ منتخب ہوئے ہیں۔

پی ٹی آئی انٹرا پارٹی انتخابات کی تفصیل پارٹی کے ترجمان فواد چوہدری نے الیکشن کمیشن میں جمع کرائیں تھیں۔انٹرا پارٹی الیکشن میں احتساب پینل اور انصاف پینل مدمقابل تھے۔ الیکشن کے دوران دونوں پینلزکو کل 2لاکھ 56 ہزار 957ووٹ پڑے۔ انصاف پینل نے ایک لاکھ 89ہزار 55ووٹ حاصل کیے اور مدمقابل احتساب پینل کو 41 ہزار 647 ووٹ ملے جب کہ 26 ہزار 255 ووٹ مسترد ہوئے۔ 

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں