ٹوئٹر کے حوالے سے اب تک کا بڑا انکشاف سامنے آگیا

واشنگٹن: سماجی رابطے کی معروف ویب سائٹ ٹوئٹر کے حوالے سے بڑا انکشاف سامنے آگیا ۔ سوشل میڈیا کے ماہرین کے مطابق اگر کوئی آپ کی ٹویٹر پوسٹ، لائک یا شیئر کرتا ہے تو ضروری نہیں وہ انسان ہو بلکہ وہ کوئی کمپیوٹر پروگرام بھی ہوسکتا ہے جسے ”ٹویٹربوٹ“ کا نام دیا گیا ہے۔

ٹوئٹر کے حوالے سے اب تک کا بڑا انکشاف سامنے آگیا

واشنگٹن: سماجی رابطے کی معروف ویب سائٹ ٹوئٹر کے حوالے سے بڑا انکشاف سامنے آگیا ۔ سوشل میڈیا کے ماہرین کے مطابق اگر کوئی آپ کی ٹویٹر پوسٹ، لائک یا شیئر کرتا ہے تو ضروری نہیں وہ انسان ہو بلکہ وہ کوئی کمپیوٹر پروگرام بھی ہوسکتا ہے جسے ”ٹویٹربوٹ“ کا نام دیا گیا ہے۔


یونیورسٹی آف سدرن کیلیفورنیا کے ماہرین نے 6 زمروں میں 1150 فیچرز نوٹ کرکے ان بوٹس کا پتا لگایا ہے۔ ان میں ٹویٹ کا متن، نیٹ ورک پیٹرن، ٹویٹ کے اوقات اور احساسات بھیجنے وغیرہ کو نوٹ کیا گیا ہے۔اگرچہ بعض بوٹس ٹویٹر پر ایک بھونچال مچارہے ہیں لیکن کچھ اکاو¿نٹ بہت مفید ہیں جن میں صارفین کی معلومات، صحت کا احوال اور قدرتی آفتوں سے خبردار کرنے والے بوٹس مقبول ہیں۔ماہرین نے ایک ماڈل بنا کر اس میں ٹویٹس کا ڈیٹا شامل کیا اور تجزیہ کرنے پر معلوم ہوا کہ 9 سے 15 فیصد اکاو¿نٹس بوٹس چلارہے ہیں نہ کہ انسان، اور ان میں سے کئی بہت مفید بھی ہیں۔ اس کے علاوہ کئی سوشل بوٹس رضاکارانہ سرگرمیوں، خبروں اور معلومات کی ترسیل کا کام کررہے ہیں۔

اس سے قبل ٹویٹر کمپنی نے کہا تھا کہ اس کے کروڑوں اکاو¿نٹس انسانی نہیں اور اب معلوم ہوا ہے کہ اس کے 319 ملین (31 کروڑ 90 لاکھ) میں سے 4 کروڑ 80 لاکھ صارفین روبوٹ پر مشتمل ہیں۔ یہ چھوٹے کمپیوٹر پروگرام ہوتے ہیں جو معلومات کو آگے بھیجنے، ری ٹویٹ کرنے اور دیگر امور انجام دینے کا کام کرتے ہیں۔