نواز شریف سے منسوب ریمارکس پارٹی پالیسی کی نمائندگی نہیں کرتے، شہباز شریف

نواز شریف سے منسوب ریمارکس پارٹی پالیسی کی نمائندگی نہیں کرتے، شہباز شریف
قومی مفاد پر کسی صورت سمجھوتہ نہیں کیا جا سکتا، شہباز شریف۔۔۔۔۔فائل فوٹو

لاہور: نواز شریف کے متنازع بیان پر شہباز شریف صفائیاں دینے لگ گئے۔ سوشل میڈیا پر ٹویٹر پیغام میں کہا قومی مفاد پرکسی صورت سمجھوتہ نہیں کیا جا سکتا۔ نواز شریف سےمنسوب ریمارکس پارٹی پالیسی کی نمائندگی نہیں کرتے۔


اپنے پیغام میں ان کا مزید کہنا تھا کہ اخباری رپورٹ میں نواز شریف سے چند ریمارکس غلط طو رپر منسوب کیے گئے۔ ریاست پاکستان، تمام ادارے دہشتگردی کیخلاف جنگ میں ساتھ کھڑے ہیں اور پختہ یقین ہے ملکی مفاد ذاتی اور سیاسی مفاد سے بالاتر ہے۔

واضح رہے کہ حال ہی میں بھارتی میڈیا کی جانب سے سابق وزیراعظم کے ایک انٹرویو کو اچھالا گیا جس میں انہوں نے کہا تھا کہ کیا غیر ریاستی عناصر کو یہ اجازت دینی چاہیے کہ وہ ممبئی جا کر 150 افراد کو قتل کریں۔ سابق وزیراعظم کا کہنا تھا کہ عسکری تنظیمیں، نان اسٹیٹ ایکٹرز (غیر ریاستی عناصر) ہیں جو ممبئی حملوں کے لیے پاکستان سے گئے۔

نواز شریف کا کہنا تھا کیا یہ اجازت دینی چاہیے کہ غیر ریاستی عناصر ممبئی جا کر 150 افراد کو ہلاک کر دیں۔ بتایا جائے ہم ممبئی حملہ کیس کا ٹرائل مکمل کیوں نہیں کر سکے؟۔

مزید پڑھیں: غدار کہا نہیں جا رہا بلکہ کہلوایا جا رہا ہے، نواز شریف

یاد رہے کہ نواز شریف تقریباً ساڑھے تین سال وزارت عظمیٰ کے عہدے پر فائز رہے تاہم اس دوران ان کی طرف سے اس قسم کی کوئی بات نہیں کی گئی اور اب اچانک یہ متنازع بیان سامنے آنے کے بعد بھارتی میڈیا اسے مختلف رنگ دے رہا ہے۔

سابق وزیراعظم نواز شریف کے متنازع بیان پر ملک کے سینئر دفاعی، سیاسی تجزیہ کاروں اور سیاست دانوں کا شدید ردعمل سامنے آیا جس میں بیان کو ملک دشمنی قرار دے دیا گیا۔

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں