چکن کا گوشت کھانا تکلیف دہ مرض کا باعث بن سکتا ہے، طبی تحقیق

چکن کا گوشت کھانا تکلیف دہ مرض کا باعث بن سکتا ہے، طبی تحقیق

نیو یارک: چکن کا گوشت پیشاب کی نالی میں سوزش کا خطرہ بڑھ سکتا ہے۔ یہ انتباہ امریکا میں ہونے والی ایک طبی تحقیق میں سامنے آیا۔ اس تحقیق کے دوران پیشاب کی نالی میں سوزش کے شکار افراد کے پیشاب کے نمونے اور چکن کے گوشت کا تجزیہ کیا گیا۔ نتائج سے معلوم ہوا کہ چکن میں ای کولی نامی بیکٹریا کی ایسی تین اقسام ہو سکتی ہیں جو کہ پیشاب کی نالی میں سوزش کے امراض کا باعث بنتی ہیں۔


محققین کا کہنا تھا کہ نتائج سے عندیہ ملتا ہے کہ غذا سے بھی پیشاب کی نالی میں انفیکشن کا امکان ہوتا ہے اور چکن اس حوالے سے بڑا ذریعہ ثابت ہو سکتی ہے۔ تاہم ان کا کہنا تھا کہ اس حوالے سے مزید تحقیق کی ضرورت ہے تاکہ اس حوالے سے باضابطہ طور پر تصدیق کی جا سکے کہ یہ گوشت اس مرض کا خطرہ بڑھاتا ہے۔ اس سے پہلے سائنسدان یہ جاننے کی کوشش کرتے رہے تھے کہ ای کولی بیکٹریا کی خطرناک قسم کس طرح پیشاب کی نالی میں پہنچتی ہے تاہم خیال کیا جاتا تھا کہ چکن کا گوشت اس کا بڑا ذریعہ بنتا ہے۔

اس نئی تحقیق میں اس تعلق کا جائزہ ایک ہزار مریضوں میں لیا گیا اور دکانوں سے گوشت کے نمونے حاصل کیے گئے۔ نتائج سے معلوم ہوا کہ گوشت کے متعدد نمونے ای کولی کی آمیزش پائی گئی اور یہ بھی معلوم ہوا کہ چکن کے کچے گوشت کو صحیح طرح نہ پکایا جائے یا اسے ٹھیک طرح ہینڈل نہ کیا جائے تو یہ مختلف جگہوں کو جراثیموں سے آلودہ کر دیتا ہے۔ محققین کا کہنا تھا کہ وہ اس حوالے سے ابھی مزید ریسرچ کے بعد کوئی بات مصدقہ طور پر کہہ سکیں گے۔

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں