زبردستی کورونا ویکسین لگانے کیخلاف درخواست قابل سماعت ہونے پر فیصلہ محفوظ

زبردستی کورونا ویکسین لگانے کیخلاف درخواست قابل سماعت ہونے پر فیصلہ محفوظ
سورس: فوٹو: بشکریہ ٹوئٹر

اسلام آباد: اسلام آباد ہائیکورٹ نے زبردستی کورونا ویکسین لگانے کے خلاف درخواست قابل سماعت ہونے پر فیصلہ محفوظ کر لیا ہے۔ 

میڈیا رپورٹس کے مطابق اسلام آباد ہائیکورٹ کے جسٹس محسن اختر کیانی نے درخواست کی سماعت کی جس دوران درخواست گزار ریاض حنیف راہی ایڈووکیٹ عدالت کے سامنے پیش ہوئے اور کہا کہ ویکسین نہ لگوانے کے خلاف بہت ساری پابندیاں لگانے کا کہا گیا ہے۔ 

ریاض حنیف راہی نے دلائل دئیے کہ غریب اور مزدور طبقہ کے لوگ کورونا وائرس سے ڈرتے ہی نہیں جبکہ جن لوگوں نے ویکسین لگوائی ہے، وہ بھی کورونا سے متاثر ہورہے ہیں، حتیٰ کہ یہ عدالت بھی کورونا کی وجہ سے ایک ہفتے تک بند رہی۔ 

درخواست گزار نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ زبردستی ویکسی نیشن سے لوگوں کے بنیادی حقوق متاثر ہورہے ہیں، زبردستی ویکسین لگانا انسانی حقوق اور اسلامی روایات کے خلاف ہے۔ عدالت نے دلائل مکمل ہونے کیساتھ ہی درخواست پر فیصلہ محفوظ کر لیا ہے۔