کارکنان دھرنے ختم کریں اور پرامن طور پر گھروں کو چلے جائیں، سعد رضوی کا پیغام

کارکنان دھرنے ختم کریں اور پرامن طور پر گھروں کو چلے جائیں، سعد رضوی کا پیغام
کیپشن:   کارکن دھرنا ختم کریں اور پرامن طور پر گھروں کو چلے جائیں، سعد رضوی سورس:   فائل فوٹو

لاہور: کالعدم تحریک لبیک پاکستان (ٹی ایل پی) کے امیر نے کہا ہے کہ کارکن پرامن طور پر اپنے گھروں کو چلے جائیں اور مرکز و مسجد رحمتہ العلمین کے باہر بھی احتجاج اور دھرنا فی الفور پر ختم کر دیا جائے۔ 

وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی ڈاکٹر شہباز گل کی طرف سے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ایک خط شیئر کیا گیا۔جس پر انہوں نے لکھا کہ حافظ محمد سعد رضوی کی تازہ ترین سٹیمنٹ ہے۔

اس بیان میں کالعدم  تحریک لبیک پاکستان کے امیر حافظ محمد سعد نے شوریٰ ممبران کے نام پیغام لکھتے ہوئے کہا کہ میں تمام شوریٰ ممبران اور کارکنان تحریک لبیک یا رسول اللہ سے مخاطب ہوں اور یہ اپیل کرتا ہوں کہ ملکی مفاد اور عوام الناس کی خاطر کوئی غیر قانونی قدم نہ اٹھایا جائے۔

حافظ سعد رضوی نے کہا کہ تمام احتجاجی جلسے اور روڈ بلاک فی الفور ختم کیے جائیں، تمام کارکن پر امن طور پر گھروں کو واپس چلے جائیں ، قانون نافذ کرنے والے اداروں سے مکمل تعاون کیا جائے۔ آخر میں انہوں نے کہا کہ مرکز و مسجد رحمۃ اللعالمین کے باہر بھی احتجاج اور دھرنا فی الفور ختم کر دیا جائے۔

دوسری جانب وزارت داخلہ نے وفاقی کابینہ کی منظوری کے بعد انسداد دہشتگردی ایکٹ 1997ء کے تحت تحریک لبیک پاکستان کو کالعدم قرار دے دیا۔ وزارت داخلہ کی طرف سے نوٹیفیکیشن جاری کر دیا گیا ہے۔

خیال رہے کہ پنجاب حکومت نے تحریک لبیک پاکستان (ٹی ایل پی) پر پابندی کی سفارش کی تھی جس کی سمری وزیراعظم کو ارسال کی گئی تھی۔ تحریک لبیک پر پابندی کیلئے وفاقی کابینہ سے منظوری سرکولیشن سمری کے ذریعے لے کر انسداد دہشتگردی ایکٹ کے تحت اس پر پابندی عائد کرنے کی منظوری دی گئی۔

ذرائع کا بتانا ہے کہ سمری کی منظوری کے بعد تحریک لبیک پاکستان پر پابندی کے ڈیکلیئریشن پر کام شروع کر دیا گیا ہے۔ وفاقی حکومت پابندی کا ڈیکلیئریشن سپریم کورٹ پیش کرے گی۔

سپریم کورٹ کے فیصلے پر الیکشن کمیشن تحریک لبیک پاکستان کو ڈی نوٹیفائی کرے گا۔