اسلام آباد ہائیکورٹ نے پولیس کو عطاءتارڑ کی گرفتاری سے روک دیا

اسلام آباد ہائیکورٹ نے پولیس کو عطاءتارڑ کی گرفتاری سے روک دیا

اسلام آباد: اسلام آباد ہائیکورٹ نے پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رہنماءاور وزیراعظم شہباز شریف کے معاون خصوصی عطاءاللہ تارڑ کی حفاظتی ضمانت منظور کرتے ہوئے پولیس کو ان کی گرفتاری سے روک دیا ہے۔ 

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائیکورٹ کے قائم مقام چیف جسٹس عامر فاروق نے عطاءتارڑ کی درخواست سماعت کیلئے آج ہی مقرر کی تھی اور کیس کی سماعت کرتے ہوئے 14 روز کیلئے حفاظتی ضمانت منظور کر لی۔ 

واضح رہے کہ پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رہنما عطاءاللہ تارڑ نے تھانہ قلعہ گجر سنگھ میں درج مقدمے میں حفاظتی ضمانت کیلئے اسلام آباد ہائیکورٹ سے رجوع کیا تھا۔

پنجاب پولیس نے لاہور میں عطاءاللہ تارڑ کی گرفتاری کیلئے چھاپہ مارا تھا جس پر انہوں نے حفاظتی ضمانت کیلئے درخواست دائر کی جس میں موقف اختیار کیا گیا کہ میرے خلاف 25 مئی کو پی ٹی آئی کارکنان پر تشدد کا مقدمہ درج ہے۔

درخواست میں عطاءتارڑ نے استدعا کی کہ پولیس نے گرفتاری کیلئے رہائش گاہ پر چھاپہ مارا ہے، لہٰذا میری حفاظتی ضمانت منظور کی جائے اور عدالت نے ان کی 14 روز کیلئے حفاظتی ضمانت منظور کر لی ہے۔ 

یاد رہے کہ 1 روز قبل لاہور پولیس نے 25 مئی کے تشدد کے واقعات کے تناظر میں وزیراعظم شہباز شریف کے معاون خصوصی عطاءاللہ تارڑ اور مرکزی رہنما رانا مشہود احمد خان کی رہائش گاہوں پر چھاپے مارے تھے۔ 

مصنف کے بارے میں