چوہدری برادران نیب کے سامنے پیش، سوالنامہ جمع کرا دیا

لاہور: مسلم لیگ (ق) کے صدر چوہدری شجاعت اور پرویز الٰہی نیب ٹیم کا سوالنامہ جمع کرانے کے لیے نیب لاہور کے دفتر پہنچ گئے۔ قومی احتساب بیورو لاہور نے چوہدری شجاعت اور پرویز الٰہی کے 1985 سے اب تک کے اثاثوں کی تفصیلات جمع کی تھیں اور اس سلسلے میں ان کے خلاف کیس دوبارہ کھولا گیا تھا۔

نیب نے چوہدری برادران کو گزشتہ ماہ 6 تاریخ کو طلب کیا تھا جس پر مسلم لیگ (ق) کے رہنماؤں نے نیب ٹیم کے سامنے پیش ہو کر اپنا بیان ریکارڈ کرایا تھا جب کہ اس دوران نیب ٹیم نے انہیں ایک سوالنامہ بھی دیا تھا۔ گزشتہ پیشی پر نیب ٹیم نے چوہدری برادران کو سوالنامہ مکمل کر کے جمع کرانے کی ہدایت کی تھی لیکن چوہدری شجاعت حسین اور پرویز الٰہی نے یہ سوالنامہ جمع نہیں کرایا جس پر نیب نے انہیں آج طلب کیا تھا۔

چوہدری شجاعت اور پرویز الٰہی آج نیب لاہور کے دفتر پہنچے جہاں انہوں نے نیب کا سوالنامہ تین رکنی ٹیم کو جمع کرایا جو 50 سوالات پر مشتمل تھا۔ نیب کے سوالنامے میں جائیداد کی خرید و فروخت اور دیگر اثاثوں سے متعلق پوچھا گیا تھا۔

نیب حکام نے چوہدری برادران اور ان کے بچوں کی جائیداد کے بارے میں ڈپٹی کمشنر لاہور اور گوجرانوالہ سے بھی حکومتی سطح پر تفصیلات طلب کی تھیں جنہیں چوہدری برادران کی دی گئی معلومات سے میچ کیا جا رہا ہے۔ ذرائع کا بتانا ہے کہ نیب کی تین رکنی ٹیم سوالنامے سے متعلق چوہدری برادران سے پوچھ گچھ کر رہی ہے۔

 

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں