عالمی عدالت میں کلبھوشن یادیو سے متعلق اہم پیش رفت

عالمی عدالت میں کلبھوشن یادیو سے متعلق اہم پیش رفت
Image Source : Facebook

ہیگ:عالمی عدالت انصاف میں کلبھوشن یادیو کیس کی سماعت 18 سے 21 فروری تک ہالینڈ کے شہر ہیگ میں ہو گی،پاکستانی وفد ہیگ چلا گیا۔


سابق چیف جسٹس تصدق حسین جیلانی عالمی عدالت میں ایڈہاک جج کے فرائض سرانجام دیں گے۔تفصیلات کے مطابق عالمی عدالت انصاف میں کلبھوشن یادیو کیس کی سماعت، بھارت 18 فروری کو دلائل کا آغاز کرے گا اور پاکستان 19 فروری کو اپنے دلائل دے گا۔ پاکستان عالمی عدالت کا فیصلہ اپنے حق میں آنے کے لیے پرامید ہے۔

20 فروری کو بھارتی وکلا پاکستانی دلائل پر بحث کریں گے جبکہ 21 فروری کو پاکستان جواب دے گا۔ اٹارنی جنرل، دفتر خارجہ اور وزارت قانون کے اعلی حکام بھی سماعت میں شرکت کے لیے ہیگ جائیں گے۔ پاکستان کی جانب سے سابق چیف جسٹس تصدق حسین جیلانی عالمی عدالت میں ایڈہاک جج کے فرائض سرانجام دیں گے۔

بھارت را افسر کلبھوشن یادیو کی ریٹائرمنٹ کے کوئی ثبوت فراہم نہیں کر سکا جبکہ مبارک حسین پٹیل کے نام سے جاری پاسپورٹ پر بھی تسلی بخش جواب نہیں دیا گیا۔کلبھوشن یادیو نے مبارک حسین پٹیل کے نام سے سترہ مرتبہ نیو دہلی کا سفر کیا۔ دونوں ممالک کی جانب سے شواہد پہلے ہی عالمی عدالت میں جمع کروائے جا چکے ہیں۔

پاکستان یا بھارت مزید دستاویزات عالمی عدالت میں جمع نہیں کروا سکتے۔ عالمی عدالت سماعت مکمل ہونے کے بعد فیصلہ تین سے چار ماہ میں سنائے گی۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ عالمی عدالت کا جو بھی فیصلہ ہو گا، پاکستان اس کا احترام کرے گا۔