چینی،آٹا مہنگا ہونے میں حکومت کی کوتاہی ہے، وزیراعظم عمران خان

چینی،آٹا مہنگا ہونے میں حکومت کی کوتاہی ہے، وزیراعظم عمران خان
Image Source: File Photo

لاہور: چینی،آٹا مہنگا ہونے پر وزیراعظم نے اپنی حکومت کی کوتاہی تسلیم کرتے ہوئے کہا کہ چینی اور آٹا جو مہنگا ہوا ہے اس میں ہماری کوتاہی ہے۔ جانتے ہیں کس نے مہنگائی کر کے فائدہ اٹھایا ہے۔  مہینوں اور سالوں میں پاکستان تبدیل ہو گا۔ سسٹم بھی تبدیل ہو گا۔ عدل اور انصاف ملے گا۔ قانون کی حکمرانی ہو گی۔


تفصیلات کے مطابق ، صحت سہولت کارڈ تقسیم کرنے کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم کا کہنا تھا کہ پاکستان کو کبھی ایشین ٹائیگر بنانے کا نہیں کہا تھا۔ میں نے کہا تھا مدینہ کی ریاست کے اصول اپنائیں گے۔ مدینہ کی ریاست کا اصول ریاست کمزورطبقے کی ذمہ داری ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ جب اللہ کی مخلوق کی خدمت کرتے ہیں تو زندگی بدل جاتی ہے، میوہسپتال میں کینسرکے مریض کی مایوسی کودیکھ کرشوکت خانم بنایا، میوہسپتال میں غریب آدمی کودیکھ کرشوکت خانم بنانے کا فیصلہ کیا تھا۔ غریب لوگ سرکاری ہسپتالوں میں علاج کرواتے ہیں جبکہ زیادہ مالدار لوگ اپنے علاج کے لیے لندن چلے جاتے ہیں۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ جو آج ہیلتھ کارڈ تقسیم کیے گئے ہیں، پورے پنجاب میں 72 لاکھ لوگوں کو صحت کارڈ ملیں گے، یہ سفر مدینہ کی ریاست کے اصولوں کا سفر ہے۔ ہر سال غریبوں کو سہولتیں دیں گے۔

وزیراعظم کا مزید کہنا تھا کہ خیبر پختونخوا کے عوام میں ہیلتھ کارڈ سسٹم کی وجہ سے دو تہائی اکثریت ملی۔ تین چار سال تک مدینہ کی ریاست کو بھی مشکلات تھی۔ ہم نے سب سے پہلے کمزور طبقے کو اٹھانا ہے۔ ہم فلاحی ریاست کی جانب بڑھ رہے ہیں۔

تقریب کے دوران مہنگائی کے حوالے سے خطاب کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ روپیہ جب بھی گرے گا تو باہر سے چیزیں منگوائیں گے تو اشیائے خورو نوش مہنگی ہوں گی۔ ہماری حکومت آئی تو تجارتی خسارہ بہت زیادہ تھا۔ حکومت ملی تو 60 ارب ڈالر کی چیزیں درآمد کر رہے تھے۔ اسی وجہ سے روپیہ گرا۔ اسی وجہ سے جو چیزیں باہر آئیں اس وجہ سے مہنگائی میں اضافہ ہوا۔

عمران خان کا مزید کہنا تھا کہ کھانے پینے کی جو چیزیں مہنگی ہوئی ہیں، چینی اور آٹا جو مہنگا ہوا ہے اس میں ہماری کوتاہی ہے۔ اس پر پوری تحقیق ہو رہی ہے۔ جانتے ہیں کس نے مہنگائی کر کے فائدہ اٹھایا ہے۔ سب پتہ چل گیا ہے۔ مہنگائی کر کے پیسہ بنانے والوں کو چھوڑیں گے نہیں۔ سسٹم ایسا بنائیں گے جس سے پتہ چل سکے کس چیز کس وقت ضرورت ہے۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ انشاء اللہ پاکستان عظیم ملک بنے گا۔ اللہ نے ملک کو بہت ساری نعمتیں دی ہیں، اقتدار میں آنے سے پہلے مجھے نہیں پتہ تھا۔ مہینوں اور سالوں میں پاکستان تبدیل ہو گا۔ سسٹم بھی تبدیل ہو گا۔ عدل اور انصاف ملے گا۔ قانون کی حکمرانی ہو گی۔

اس سے قبل وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کا کہنا تھا کہ ملتان کارڈیالوجی کی توسیع کی جارہی ہے۔ مظفرگڑھ میں طیب اردوان ہسپتال آخری مراحل میں ہے، راجن پور،لیہ،سیالکوٹ،بہاولپورمدراینڈ چائلڈ ہسپتال تعمیرکیے جائیں گے۔ گوجرانوالہ میں چلڈرن ہسپتال بھی بنایا جارہا ہے، 375ایمبولینس کے لیے فنڈزجاری کیے جاچکے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ لاہورمیں پی آئی سی ٹوبنایا جارہا ہے، پی آئی سی ٹو لاہورمیں چالیس سال بعد بنایا جارہا ہے، محکمہ صحت میں مالی مشکلات کے باوجود 28 ہزارلوگوں کوبھرتی کیا گیا۔ صحت کارڈ سے پنجاب کے 36اضلاع کومفت علاج کی سہولت میسرہوگی۔