وزیر جنگلات پنجاب سبطین خان کرپشن الزام پر عہدے سے مستعفی

وزیر جنگلات پنجاب سبطین خان کرپشن الزام پر عہدے سے مستعفی
سبطین خان نے گرفتاری کے بعد اپنا استعفیٰ وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کو بھجوایا ہے۔۔۔۔۔فوٹو/ پنجاب اسمبلی ویب سائٹ

لاہور: نیب کے ہاتھوں کرپشن کیس میں گرفتار وزیر جنگلات پنجاب سبطین خان عہدے سے مستعفی ہوگئے۔پاکستان تحریک انصاف کے رہنما اور صوبائی وزیر جنگلات سبطین خان نے وزارت سے استعفیٰ دے دیا ہے۔ سبطین خان نے نیب کے ہاتھوں گرفتاری کے بعد اپنا استعفیٰ وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کو بھجوایا ہے اور استعفے سے وزیراعظم عمران خان و دیگر پارٹی قیادت کو بھی آگاہ کر دیا ہے۔


سبطین خان کا کہنا ہے کہ میرا دامن صاف ہے اور اس کے باوجود اپنے عہدے سے مستعفی ہوتا ہوں۔ نیب ٹیم نے سبطین خان کو احتساب عدالت میں پیش کر دیا ہے جہاں ان کے جسمانی ریمانڈ کی درخواست کی جائے گی۔

نیب لاہور نے سبطین خان کو گزشتہ روز گرفتار کیا تھا۔ ان پر چنیوٹ اور راجوہ میں اربوں روپے کے غیرقانونی ٹھیکے من پسند کمپنی کو نوازنے کا الزام ہے۔

ملزم سبطین خان کی جانب سے جولائی 2007ء میں ای آر پی ایل نامی ایک کمپنی کو ٹھیکہ فراہم کرنے کے غیرقانونی احکامات جاری کیے گئے اور ٹھیکہ قوانین سے انحراف کرتے ہوئے فراہم کیا گیا۔