پنجاب کے عوام کیلئے 7 ارب روپے کا رمضان پیکیج، 10 کلو آٹے کا تھیلا کتنے میں ملے گا اور چینی کتنے روپے کلو دستیاب ہو گی؟ خوشخبری آ گئی

پنجاب کے عوام کیلئے 7 ارب روپے کا رمضان پیکیج، 10 کلو آٹے کا تھیلا کتنے میں ملے گا اور چینی کتنے روپے کلو دستیاب ہو گی؟ خوشخبری آ گئی
سورس:   فوٹو: بشکریہ ٹوئٹر

لاہور: وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے صوبے کے عوا م کو ریلیف دینے کیلئے 7 ارب روپے کے رمضان پیکیج کا اعلان کر دیا ہے جس کے تحت صوبے بھر میں 313 رمضان بازار لگائے جائیں گے اور آٹے کا تھیلا مارکیٹ ریٹ سے 120 روپے سستا ملے گا جبکہ دال چنا، بیسن، کھجور اور دیگر اشیاءضروریہ بھی 2018ءکے نرخوں پر ملیں گی، ان بازاروں میں چینی 60 روپے کلو میں دستیاب ہوگی۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کی زیر صدارت کابینہ کمیٹی کا خصوصی اجلاس ہوا جس میں رمضان پیکیج کے حوالے سے اقدامات کا جائزہ لیا گیا۔ وزیراعلیٰ پنجاب نے کہا کہ 7 ارب کے رمضان پیکیج کے تحت صوبے بھر میں 313 رمضان بازار لگائے جائیں گے جبکہ 10 کلو آٹے کا تھیلا رمضان بازاروں میں مارکیٹ ریٹ سے بھی 120 روپے سستا دستیاب ہو گا اور صرف سستے آٹے کی فراہمی پر پنجاب حکومت تقریباً تین ارب 50 کروڑ روپے سبسڈی دے گی۔ 

ان کا کہنا تھا کہ رمضان بازاروں میں کورونا ایس او پیز پر عملدرآمد یقینی بنایا جائے گا اور خریدارو ں کی زندگیو ں کے تحفظ کیلئے سماجی فاصلہ برقرار رکھنا لازمی ہو گا۔ عثمان بزدار نے مزید کہا کہ رمضان بازاروں میں زرعی فیئر پرائس شاپس لگائی جائیں گی، جن پر پھل اور سبزیاں 2018ءکے ریٹ کے مطابق صارفین کو دستیاب ہوں گی۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ ان رمضان بازاروں میں دال چنا، بیسن، کھجور اور دیگر اشیاءضروریہ بھی 2018ءکے نرخوں پر ملیں گی، ان بازاروں میں چینی 60 روپے کلو میں دستیاب ہو گی۔ وزیراعلیٰ پنجاب نے کہا کہ گھی، چکن اور انڈے مارکیٹ سے 10 سے 15 روپے کم قیمت پر رمضان بازاروں میں ملیں گے، ماہ رمضان میں عوام کو زیادہ سے زیادہ ریلیف دینے کی ہدایت کر دی ہے اور عوام کو مستقل بنیاد وں پر ریلیف دینے کیلئے سہولت بازاروں کا دائرہ کار بھی وسیع کریں گے۔ 

وزیراعلیٰ پنجاب نے رمضان بازاروں کے حوالے سے سہولت بازار اتھارٹی کے قیام کی ہدایت کی اور کہا کہ سہولت بازاروں کے ذریعے اپنے عوام کو مصنوعی مہنگائی سے مستقل نجات دلاؤں گا۔ انہوں نے ہدایت کی کہ رمضان بازاروں کے انتظامات میں خصوصی بچت اور کفایت شعاری کی جائے اور ان بازاروں کے انتظامات میں کم سے کم اخراجات کئے جائیں۔