صنعاء: یمن میں عرب اتحادی فضائیہ کی بمباری کے نتیجے میں 14 افراد ہلاک اور 11 زخمی ہوگئے۔خبر رساں ادارے رائٹرز کے مطابق فضائی حملے کے عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ عرب اتحادی فضائیہ نے وسطی یمن میں ایک تیل بردار ٹرک کو نشانہ بنایا تھا تاہم اتحادیوں نے ان دعوؤں کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ جس ٹرک کو فضائی کارروائی میں نشانہ بنایا گیا اس پر جنگجوؤں کیلئے فوجی ساز و سامان موجود تھا۔

میڈیکل رضاکاروں اور عینی شاہدین کا کہنا تھا کہ صوبہ اِب کے علاقے یارمن میں ایک سڑک پر دو ٹرک گزر رہے تھے کہ ان پر بمباری کی گئی جس کے نتیجے میں   یمن میں عرب اتحاد کی فضائی بمباری، 20 ہلاک۔یارمن ہسپتال کے میڈیکل رضاکاروں کا کہنا تھا کہ ہسپتال میں 10 لاشیں لائی گئیں جن میں ایک فوجی کی تھی۔

ہسپتال انتظامیہ کے مطابق 15 زخمیوں کو علاج کیلئے ہسپتال منتقل کیا گیا تھا جس میں بیشتر کی حالت تشویشناک تھی۔حکام نے مزید بتایا کہ بعد ازاں علاج کے دوران زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے 3 افراد ہلاک ہوگئے۔دوسری جانب عرب اتحاد کے ترجمان بریگیڈیئر جنرل احمد العسیری کا کہنا تھا کہ مذکورہ گاڑیوں کا قافلہ حوثی جنگجوؤں اور دیگر عسکریت پسندوں کو اسلحہ اور گولہ باردو کی فراہمی کیلئے صوبہ اِب سے شہرِ تیز کی جانب جارہا تھا۔

انھوں نے کہا کہ رات گئے یہ قافلہ ری پبلکن گارڈز کے 55ویں بریگیڈ کے علاقے میں رک گیا جہاں انھیں فضائی کارروائی میں نشانہ بنایا گیا۔

ترجمان نے دعویٰ کیا کہ جس وقت حملہ کیا گیا تھا ان گاڑیوں کے اطراف میں حوثی جنگجو اور اسمگلرز موجود تھے۔