پاکستان میں انٹر نیشنل کرکٹ کی بحالی، آئی سی سی کا سیکیورٹی کمپنی سے معاہدہ

پاکستان میں انٹر نیشنل کرکٹ کی بحالی، آئی سی سی کا سیکیورٹی کمپنی سے معاہدہ

لاہور: پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین نجم سیٹھی کا کہنا ہے کہ انٹرنیشنل کرکٹ کونسل نے پاکستان میں کرکٹ کی بحالی میں مدد کے لیے بین الاقوامی سیکیورٹی کمپنی سے 3 سالہ معاہدہ کر لیا۔ پی سی بی کے نو منتخب چیئرمین نجم سیٹھی کا کہنا تھا کہ مذکورہ سیکیورٹی کمپنی رواں ماہ اگست کے آخر میں یا پھر آئندہ ماہ ستمبر کے آغاز میں پاکستان کا دورہ کرے گی اور ملک میں سیکیورٹی کی صورتحال کا جائزہ لے گی۔


انہوں نے بتایا کہ یہ سیکیورٹی کمپنی برطانیہ، نیوزی لینڈ اور متحدہ عرب امارات میں موجود ہے اور بین الاقوامی سطح پر اس کی شہرت اچھی ہے۔ آئی سی سی کے اس اقدام کی تعریف کرتے ہوئے نجم سیٹھی کا کہنا تھا کہ یہ پاکستان میں کرکٹ کی بحالی کے لیے ایک مثبت قدم ہے۔ نجم سیٹھی کا کہنا تھا کہ فیڈریشن آف انٹرنیشنل کرکٹرز کا ایک نمائندہ بھی اس سیکیورٹی کمپنی کے ساتھ لاہور آئے گا جو ذاتی طور پر سیکیورٹی کی صورتحال کا جائزہ لے گا۔

پی سی بی کے نو منتخب چیئرمین نے بتایا کہ یہ ایک چار روزہ دورہ ہو گا جس میں سیکیورٹی کمپنی حکومتِ پنجاب کے ساتھ مل کر سیکیورٹی کا جائزہ لے گی جبکہ پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) دیکھنے کے لیے آنے والے مختلف ممالک کے سیکیورٹی ماہرین کی سفارشات، حکومت کے معیاری آپریٹنگ کے طریقہ کار (ایس او پی) میں شمولیت کا بھی جائزہ لیا جائے گا۔

نجم سیٹھی نے انکشاف کیا کہ مذکورہ ٹیم ہر سال پاکستان کا دورہ کرے گی اور سیکیورٹی کی صورتحال کا جائزہ لے گی جس کے لیے ٹیم کو 4 لاکھ امریکی ڈالر دیے جائیں گے۔ یوں اس ٹیم کو تین سال کی مدت میں کل 12 لاکھ ڈالر دیے جائیں گے۔ سیکیورٹی کمپنی کی رپورٹ کی بنیاد پر پاکستان میں پی ایس ایل کے انعقاد کی منظوری دی جائے گی جس میں بین الاقوامی کرکٹرز بھی حصہ لیں گے۔

نجم سیٹھی کا کہنا تھا کہ ایف آئی سی اے کے نمائندے کو اس ٹیم میں شامل کرنے کا مقصد تمام بین الاقوامی کھلاڑیوں کے پاکستان کے حوالے سے خدشات دور کرنا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ پی ایس ایل کے دوسرے ایڈیشن کا فائنل دیکھنے کے لیے آنے والے غیر ملکی سیکیورٹی ماہرین کی سفارشات کو حکومت پنجاب کی ایس او پی میں شامل کر لیا گیا ہے۔

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں