اگر القدس مسلمانوں کے ہاتھ سے نکل گیا تو مدینہ منورہ کا تحفظ نہیں کیا جا سکتا : طیب اردگان

اگر القدس مسلمانوں کے ہاتھ سے نکل گیا تو مدینہ منورہ کا تحفظ نہیں کیا جا سکتا : طیب اردگان

انقرہ : ترک صدر رجب طیب اردگان نے کہا ہے کہ اگر القدس مسلمانوں کے ہاتھ سے نکل گیا تو پھر مدینہ منورہ کا بھی تحفظ نہیں کیا جا سکتا،اللہ تعالی کے احکامات اور ہمارے آبا اجداد کی امانت کا تحفظ کرنے کے لیے جو کچھ بھی لازم ہوا ہم اسے ضرور کریں گے۔


ایک بیان میں ترک صدر کا کہنا ہے کہ شام میں تمام تر مسلمانوں کے مستقبل سے قریبی طور پر تعلق رکھنے والے سیناریو کو بگاڑا گیا ہے اب بیت المقدس کے ذریعے تمام تر مشرق وسطی اور مسلم امہ کو ہدف بنانے والی ایک نئی چال چلی جا رہی ہے۔اس معاملے میں ہم نے ابتدائی اقدامات گزشتہ بدھ کے روز اٹھائے تھے انشااللہ ان کا دوام بھی آئیگا۔ ہم اس چیز کو بخوبی جانتے ہیں کہ اگر القدس ہمارے ہاتھ سے نکل گیا تو پھر مدینہ منورہ کا تحفظ بھی خطرے میں پڑ جائیگا۔ مکہ منورہ اور خانہ کعبہ بھی محفوظ نہیں رہیں گے۔

یہ فراموش مت کریں القدس کا مطلب استنبول ، اسلام آباد ، جکارتہ ، مدینہ ، قاہرہ ، دمشق، بغداد ہے۔ خانہ کعبہ تمام تر مسلم امہ کی عزت و ناموس، وقا ر و وجود کلا مفہوم رکھتا ہے۔ ہم ان میں سے کسی سے بھی کنارہ کشی اختیار نہیں کر سکتے، اللہ تعالی کے احکامات اور ہمارے آبا اجداد کی امانت کا تحفظ کرنے کے لیے جو کچھ بھی لازم ہوا ہم اسے ضرور کریں گے۔عالمی نظام میں خرابیاں موجود ہونے اور ان خرابیوں سے شام و فلسطین و آراکان کے معصوم عوام کے سب سے زیادہ متاثر ہونے کا ذکر کرنے والے اردگان نے کہا کہ ہم اس بد نظمی کے خلاف ہمیشہ آواز بلند کرتے ہیں۔