پشاور: حیات آباد میں ججز کی گاڑ ی کے قریب خودکش حملے کی ابتدائی رپورٹ تیار کر لی گئی اور مراسلہ سی ٹی ڈی کو ارسال کیا گیا جبکہ ایس ایچ او تھانہ حیات آباد کی مدعیت میں دہشت گردی ایکٹ کے تحت حملے کا مقدمہ درج کر لیا گیا۔ تحقیقاتی ٹیموں نے زخمیوں کے بیانات بھی قلمبند کئے گئے۔ مراسلے میں کہا گیا ہے کہ خودکش حملہ آور کی عمر 16 سے 17 سال تھی۔ حملہ آور کے جسمانی اعضاء بھی ڈی این اے کیلئے بھجوائے جائیں گے۔

 

حملہ آور کے چہرے کی سرجری کر کے نقوش بھی مکمل کیے جائیں گے۔ دوسری جانب حیات آباد میں ججزکی گاڑی پر خودکش حملے کے خلاف کے پی کے اور بلو چستان بار ایسویشنز کی کال پر دونوں صوبوں میں وکلا کی جانب سے عدالتی کاروائی کا بائیکاٹ جاری ہے۔ بار رومز میں سیاہ جھنڈے لہرائے گئے۔ سیکڑوں مقدمات کی سماعت نہ ہو سکی جس کے باعث سائلین کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔

 

 

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں