ہائیکورٹ نے الیکشن کے نام پر گاڑیوں کی پکڑ دھکڑ روک دی

ہائیکورٹ نے الیکشن کے نام پر گاڑیوں کی پکڑ دھکڑ روک دی

عدالت نے گاڑیوں کی غیر قانونی پکڑ دھکڑ کے خلاف حکم امتناعی جاری کر دیا۔۔۔فائل فوٹو

لاہور: لاہور ہائیکورٹ نے انتخابی عملے کے نام پر پنجاب کے مختلف اضلاع سے گاڑیوں کی پکڑ دھکڑ اور الیکشن کمیشن کے احکامات کے بغیر گاڑیاں قبضے میں لینے سے روک دیا۔

 

لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس جواد حسن نے کیس کی سماعت کی۔ درخواست گزار وقاص محمود وغیرہ کے وکیل سلمان منصور نے موقف اختیار کیا کہ آئین کے تحت ریاست کسی قانونی جواز کے بغیر شہریوں کے بنیادی حقوق کو سلب نہیں کر سکتی۔

 

مزید پڑھیں: آرمی چیف سے ایرانی مسلح افواج کے سربراہ کی ملاقات، روابط مزید بڑھانے پر زور

انہوں نے بتایا کہ پنجاب کے مختلف اضلاع سے پولیس نے کسی قانونی جواز اور الیکشن کمیشن کے تحریری حکم نامے کے بغیر انتخابی عملے کے نام پر گاڑیوں کی پکڑ دھکڑ کا سلسلہ شروع کر رکھا ہے۔

 

درخواست گزار کا کہنا تھا کہ پولیس کا یہ اقدام آئین کے آرٹیکل 24 کی سنگین خلاف ورزی ہے جس پر عدالت نے گاڑیوں کی غیر قانونی پکڑ دھکڑ کے خلاف حکم امتناعی جاری کر دیا۔

 

اس کے علاوہ عدالت نے پنجاب کے مختلف اضلاع کے ڈپٹی کمشنرز کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کر لیا۔

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں