پی ڈی ایم کا اجلاس آج ہوگا،  استعفوں اور لانگ مارچ پر اہم فیصلے ہوں گے

پی ڈی ایم کا اجلاس آج ہوگا،  استعفوں اور لانگ مارچ پر اہم فیصلے ہوں گے
کیپشن:   پی ڈی ایم کا اجلاس آج ہوگا،  استعفوں اور لانگ مارچ پر اہم فیصلے ہوں گے سورس:   file

اسلام آباد: جے یو آئی کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کی زیرصدارت پی  ڈی ایم  کا سربراہی اجلاس آج ہوگا ۔ ‏اجلاس میں  نوازشریف،  آصف علی زرداری وڈیو لنک  کےذریعےشریک ہوں گے۔

‏پی  ڈی ایم اجلاس میں بلاول بھٹو ،  مریم نواز، محمود خان اچکزئی شرکت کریں گے ۔‏اجلاس میں چیئرمین و ڈپٹی چیئرمین سینیٹ  انتخاب میں شکست کے بعدعملی پر مشاورت  کی جائے گی۔ چیئرمین سینیٹ کے الیکشن میں سات ووٹوں کو عدالت میں چیلنج کرنے کا بھی حتمی فیصلہ ہوگا ۔

‏پی  ڈی ایم اجلاس میں لانگ مارچ سے متعلق حکمت عملی طے کی جائے گی۔ مولانا فضل الرحمن اور مسلم لیگ ن اجلاس میں لانگ مارچ کے اختتام پر اسمبلیوں سے استعفے دینے کا مطالبہ کریں گے ۔مولانا فضل الرحمن پی ڈی ایم کے ووٹ مولانا عبدالغفور حیدری کو نہ ملنے پر بھی شکوہ کریں گے۔

ذرائع کے مطابق پی پی پی سینیٹ الیکشن کے واقعات کے باوجود اسمبلیوں سے مستعفی ہونے کی حامی نہیں۔ اجلاس میں لانگ مارچ کی منزل فیض آباد یا ڈی چوک کا فیصلہ کیا جائے گا۔اجلاس میں دھرنا کتنے دن رہے گا اس پر بھی فیصلہ ہوگا۔

واضح رہے کہ  پی ڈی ایم کا  لانگ مارچ 26 مارچ کو کراچی سے ایک عوامی اجتماع کے ساتھ شروع ہوگا، تمام جلوس 30 مارچ کی سہ پہر 3 بجے تک اسلام آباد پہنچیں گے۔ شرکاء کےاستقبال کے لیےفیض آباد پرمرکزی کیمپ ہوگاجب کہ روات چوک ،چھبیس نمبر چونگی اوربھارہ کہوہ میں بھی کیمپ لگائےجائیں گے ۔

لانگ مارچ میں تمام جماعتیں اپنے اخراجات خود برداشت کریں گی ۔لانگ مارچ کے بعد دھرنا اس وقت تک جاری رہےجب تک کہ مقصد حاصل نہیں ہوتا۔ پی ڈی ایم  لانگ مارچ سے قبل تاجروں، کسانوں اور مزدور یونینوں سے رابطہ کرے گی  تاکہ ان کو بھی اپنے ساتھ حکومت کے خلاف احتجاج میں شامل کیا جائے۔