گندم کی خریداری قیمت اور بڑھتی ہوئی پیداواری لاگت، کسانوں نے ٹریکٹر مارچ کا اعلان کر دیا

گندم کی خریداری قیمت اور بڑھتی ہوئی پیداواری لاگت، کسانوں نے ٹریکٹر مارچ کا اعلان کر دیا
سورس: فوٹو: بشکریہ ٹوئٹر

لاہور: کسان تنظیموں نے پنجاب میں گندم کی خریداری کی قیمت میں اضافے کے مطالبے اور زراعت میں بڑھتی ہوئی پیداواری لاگت کے خلاف ٹریکٹر مارچ کرنے کا اعلان کیا ہے۔ 

تفصیلات کے مطابق چیئرمین پاکستان کسان اتحاد خالد محمود کھوکھر کا کہنا ہے کہ سندھ میں گندم کی خریداری قیمت دوہزار روپے جبکہ پنجاب میں 1650روپے ہے، پنجاب اور سندھ میں گندم کی قیمت میں فرق سے سمگلنگ ہو گی، جب بھی پاکستان میں گندم کی قیمت بین الاقوامی گندم سے کم ہوتی ہے تو اس کے بعد ہمیشہ سمگلنگ ہوئی لیکن جب بھی قیمت بین الاقوامی منڈی کے برابر ہوئی ہمیشہ پاکستان نے گندم باہر بھیجی ہے۔

خالد کھوکھر نے کہا کہ 31 مارچ کو پورے پاکستان سے لاہور اور اسلام آباد کی جانب ٹریکٹر مارچ ہو گا اور یہ مارچ کھاد، بجلی، اور زرعی ادویات کی قیمتوں میں اضافے کے خلاف کیا جائے گا جس میں کسانوں کی تمام تنظیمیں شرکت کریں گی۔