امریکہ نے ڈاکٹر عافیہ کی رہائی سے متعلق پاکستان کے خط کا جواب دینے سے انکار کردیا

امریکہ نے ڈاکٹر عافیہ کی رہائی کے لیے لکھے گئے پاکستانی خط کا جواب دینے سے انکار کردیا ۔سندھ ہائی کورٹ میں ڈاکٹر عافیہ کو پاکستان لانے سے متعلق درخواست کی سماعت ہوئی جس میں درخواست گزار کے وکیل نے کہاکہ 2002میں جاری آرڈیننس کے تحت ڈاکٹر عافیہ کو واپس لا جا سکتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ پاکستان اور امریکہ کے اٹارنی جنرل اتفاق کر لیں تو سزا یافتہ قیدی کو پاکستان منتقل کیا جا سکتا ہے ۔

امریکہ نے ڈاکٹر عافیہ کی رہائی سے متعلق پاکستان کے خط کا جواب دینے سے انکار کردیا

کراچی : امریکہ نے ڈاکٹر عافیہ کی رہائی کے لیے لکھے گئے پاکستانی خط کا جواب دینے سے انکار کردیا ۔سندھ ہائی کورٹ میں ڈاکٹر عافیہ کو پاکستان لانے سے متعلق درخواست کی سماعت ہوئی جس میں درخواست گزار کے وکیل نے کہاکہ 2002میں جاری آرڈیننس کے تحت ڈاکٹر عافیہ کو واپس لا جا سکتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ پاکستان اور امریکہ کے اٹارنی جنرل اتفاق کر لیں تو سزا یافتہ قیدی کو پاکستان منتقل کیا جا سکتا ہے ۔


ادھر ڈپٹی اٹارنی جنرل نے بتا یا کہ امریکہ نے ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی رہائی سے متعلق پاکستانی حکومت کے خط کا جواب دینے سے انکار کردیا ۔درخواست گزار کے وکیل نے کہا کہ عافیہ کو بے بنیاد الزام میں 86برس قید کی سزا دی گئی ،عالمی قوانین کے مطابق عافیہ صدیقی کو چھیاسی سال کی سزا نہیں ہو سکتی ۔انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان نے عدالتی حکم کے مطابق امریکہ سے رجوع نہیں کیا ۔سماعت کے دوران چیف جسٹس نے کہا کہ عدالت دلائل کا جائزہ لے کر فیصلہ جاری کرے گی ۔