دریائے نیل کے پانی کی بے عزتی کرنے پر مصری گلوکارہ کیخلاف مقدمہ درج

دریائے نیل کے پانی کی بے عزتی کرنے پر مصری گلوکارہ کیخلاف مقدمہ درج

قاہرہ: مصر میں ایک معروف گلوکارہ کو اشتعال آمیز معلومات پھیلانے کے الزام کے حوالے سے مقدمے کا سامنا ہے کیونکہ انھوں نے کہا کہ دریائے نیل سے پانی پینے سے انسان بیمار ہو سکتا ہے۔ شرین عبد الوحاب کے خلاف یہ مقدمہ ایک ویڈیو کے منظرِ عام پر آنے کے بعد عائد کیا گیا ہے جس میں ایک کنسرٹ میں ان سے ’مشربتش من نیلحہ‘ گانے کی فرمائش کی جا رہی ہے۔ اس فرمائش کے جواب میں ان کا کہنا تھا کہ نیل سے پانی پینے سے مجھے بیماری لگ جائے گی۔


انھوں نے مزید کہا کہ ’ایوان پیجیے وہ بہتر ہے۔‘ ایوان منرل واٹر کی ایک مشہور کمپنی ہے۔ ادھر مصری موسیقاروں کی ایک تنظیم نے 37 سالہ گلوکارہ پر ’پیارے مصر کا بے جا مذاق اڑانے‘ کی وجہ سے پابندی عائد کر دی۔ تنظیم کا کہنا ہے کہ وہ معاملے کی تفتیش کر رہی ہے اور وہ گلوکارہ کو تب تک گانے کی اجازت نہیں دے گی جب تک وہ حکام کے سامنے پیش ہو کر ان کے سوالوں کے جواب نہیں دیتی۔

گلوکارہ نے بعد میں اپنے ’بیوقوف مذاق‘ کے لیے معافی مانگی۔ یہ واقعہ متحدہ عرب امارات میں ایک سال قبل پیش آیا تھا۔ میرے پیارے مصر اور مصر کے فرزندان، میں آپ سے دل کی گہرائیوں معافی مانگتی ہوں۔‘تاہم ریاستی اخبار الاحرام کے مطابق شرین عبد الوحاب کو 23 دسمبر کو قاہرہ میں عدالت میں پیش ہونا پڑے گا۔

اس مقدمے میں ان پر الزام ہے کہ انھوں نے مصری ریاست کو بدنام کیا اور ملک میں سیاحت کے فروغ کی کوششوں کو نقصان پہنچایا۔ اخبار کا کہنا ہے کہ ریاستی ٹی وی اب ان کے گانے نہیں نشر کرے گا۔

 

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں