ہندو انتہائی پسندوں کی دپیکا کو ناک کاٹنے کی دھمکی

ہندو انتہائی پسندوں کی دپیکا کو ناک کاٹنے کی دھمکی

ممبئی: ہندو انتہا پسند وں نے فلم ”پدما وتی“ کیخلاف تمام حدیں پار کرتے ہوئے بالی ووڈ اداکارہ دپیکا پڈوکون کی ناک کاٹنے کی دھمکی دے ڈالی ۔


بھارتی ذرائع ابلاغ کے مطابق دپیکا پڈوکونے گزشتہ دنوں اپنی فلم کے حوالے سے کہا تھا کہ ان کی فلم کو ریلیز سے کوئی نہیں روک سکتا۔اس کے جواب میں ہندو انتہا پسندوں نے اب ’پدماوتی‘ کی ریلیز روکنے کی دھمکی دیتے ہوئے کہا ہے کہ فلم کی نمائش ہوئی تو دپیکا پڈوکون کی ناک کاٹ دیں گے۔ اس کے علاوہ ہندو انتہا پسندوں نے یکم دسمبر کو پورے بھارت میں ہڑتال کی بھی کال دے دی ہے۔

کرنی سینا کے اہلکار مہیپال سنگھ مکرانا نے ہندووں کے مذہبی پس منظر کا حوالہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ راجپوت کرنی سینا ایک خاتون کے حوالے سے حقائق کو غلط طریقے سے پیش کرنے کی مخالفت کرتی ہے اور ہم خواتین پر ہاتھ نہیں اٹھاتے لیکن اگر ضرورت پڑی تو ایسا کریں گے۔مہیپال سنگھ نے مزید کہا کہ ہم دپیکا کے ساتھ وہی کریں گے جو ”لکشمن“ نے بھارت کے قوانین اور ثقافت کی خلاف ورزی کرنے پر ”شرپناکھا “کے ساتھ کیا تھا۔

اس کے علاوہ سشری راجپوت کرنی سینا کے سربراہ لوکندرا سنگھ کلوی نے فلم کے خلاف خون سے دستخط شدہ پٹیشن تیار کی ہے جسے سینٹرل بورڈ آف فلم سرٹیفیکیشن کو بھیجا جائے گا۔راجپوت کمیونٹی نے فلم پدماوتی کے ہدایتکار سجنے لیلا بھنسالی کے سر کی بھی قیمت 5 کروڑ روپے مقرر کردی ہے۔

دوسری جانب بھارتی وزارت داخلہ، مہاراشٹرا اور کرناٹک کی حکومتوں نے فلم کی ریلیز کے موقع پر ہر ممکن سیکیورٹی فراہم کرنے کی یقین دہانی کرادی ہے۔خیال رہے کہ بالی وڈ ہدایتکار سنجے لیلا بھنسالی کی فلم پدماوتی یکم دسمبر کو نمائش کے لئے پیش کی جانی ہے جس میں دپیکا پڈوکون کے ساتھ رنویر سنگھ اور شاہد کپور نے مرکزی کردار ادا کیا ہے۔