سکول و تعلیمی اداروں میں قبل از وقت تعطیلات کرنا لازمی قرار 

It is mandatory to take early holidays in schools and educational institutions
فوٹو: بشکریہ ڈاکٹر ظفر مرزا آفیشنل ٹویٹر اکاؤنٹ

اسلام آباد: سابق معاون خصوبرائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے پاکستان میں بھر میں کورونا وائرس کے پھیلاؤ روکنے کے لیے تعلیمی اداروں میں موسم سرما کی قبل از وقت تعطیلات کو لازمی قرار دے دیا ہے ۔ انہوں نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ ہم یہ نہیں کہتے ہیں کہ سکولوں کو غیر معینہ مدت کے لیے بند کردیا جائے ۔

 

صرف این سی اوسی نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سنٹر کی سفارشات پر عمل کیا جائے اور موسم سرما کی چھٹیاں قبل از وقت دے کر ان یں تھوڑا اضافہ بھی کردیا جائے ۔ انہوں نے نجی ٹی وی پر بات کرتے ہوئے کہا کہ نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سنٹر نے کورونا پھیلاؤ روکنے کے لیے بالکل ٹھیک سفارشات پیش کی ہیں ۔ 

ان سفارشات میں پر رونق اور پرہجوم جگہوں پر جانا ، ماسک پہننا ، سکولوں اور اجتماعات کے حوالے سے سفارشات شامل ہیں ان کا کہناتھاکہ کہ ہمارے پاس کورونا کوڈیل کرکا تجربہ اور وسائل موجود ہیں ۔ ڈاکٹر ظفر مرزا نے کہا کہ میں دو چیزیں بتادینا چاہتا ہوں ، جس میں پہلی یہ ہے کہ ہمیں این سی او سی یعنی نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سنٹر کی سفارشات پر عمل کرنا ہے ۔ 

ان سفارشات پر ہمیں پوری دلجمعی کے ساتھ عمل کرنا ہوگا۔ کورونا پچھلے دس ہفتے سے بڑھ رہاہے ۔ لیکن ہم ابھی سست دکھائی دے رہے ہیں ۔ 

انہوں نے کہا کہ ہماری سستی کی وجہ رابطوں کا فقدان ہے ۔ دوسری آپ سمجھ لیں کہ رابطوں کو فقدان ہی ہے ۔ رابطوں کے فقدان سے میری مراد یہ ہے کہ خود اسد عمر آخری نیشنل اینڈ کمانڈ آپریشن سنٹر کی میٹنگ میں کہہ چلے ہیں کہ ہم نے جو سفارشات رکھی ہیں ان پر صوبوں کا اتفاق نہیں ہے ۔

اس وجہ سے پورے ملک میں ہم عملدر آمد نہیں کروا پارہے ہیں ۔ ایک مرحلہ تھا کہ ٹرانسپورٹ ، دکانوں  ، کارخانوں میں جو لوگ ایس او پیز پر عمل نہیں کررہے تھے ان کو جرمانے کیے جارہے تھے ۔ ڈاکٹر ظفر مرزا نے کہا کہ اب وہ گرفت نظر نہیں آرہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ جب وزیراعظم نے خود ماسک پہننا شروع کیا تھا تواس کا بڑا اثر ہوا تھا پورے ملک میں لوگ ماسک پہن رہے تھے ۔ 

اگر ہم نے فوری طور اقدامات کرکے نہ روکا تو یورپ کی طرح ہمیں بھی مکمل لاک ڈاؤن کرنا پڑے گا۔ ڈاکٹر ظفر مرزا نے کہا کہ سکولوں کو بند نہ کرنے سے فرق پڑے گا۔ کیونکہ سکولوں میں کیسز آنا شروع ہوگئے ہیں ۔ ہم یہ نہیں کہتے کہ سکولوں کو غیر معینہ مدت کے لیے بند کردیاجائے  ۔ لیکن ہمیں صرف این سی او سی کی سفارشات پر عمل کرنا چاہیے ۔ موسم سرما کی چھٹیاں جلد دے کر ان میں تھوڑا اضافہ کردیا جائے ۔ 

ماہر تعلیم کا کہنا ہے کہ اگر موسم سرما کی تعطیلات جلد دی گئی تو ممکنہ طور پر چھٹیاں دسمبر سے لیکر فروری تک ہوسکتی ہیں ۔ کیونکہ یہ وہ مہینے ہیں جن یں کورونا کی وبا پھیلنے کا شدید خدشہ ہے ۔ سرد موسم کورونا کے پھیلاؤ میں مدد گار ثابت ہو رہاہے ۔