فیض آباد پر دھرنا جاری، وزیراعظم کی مذاکرات کی ہدایت

فیض آباد پر دھرنا جاری، وزیراعظم کی مذاکرات کی ہدایت
کیپشن:   فوٹو/اسکرین گریب۔۔۔۔۔۔۔نیو نیوز

اسلام آباد: گستاخانہ خاکوں کے خلاف مذہبی جماعت کا دھرنا جاری۔ وزیراعظم عمران خان نے وفاقی وزیر مذہبی امور پیر نور الحق قادری کو فوری طور پر طلب کر لیا۔

وزیراعظم نے وفاقی وزیر مذہبی امور پیر نور الحق قادری کو فیض آباد پر دھرنے پر بیٹھے لوگوں سے فوری طور پر مذاکرات کرنے کی ہدایت کر دی۔ نور الحق قادری وزیراعظم کی طرف سے ہدایت ملتے ہی لاہور سے اسلام آباد پہنچ گئے ہیں۔ فیض آباد پر دھرنا دینے والوں سے مذاکرات کریں گے۔

دوسری جانب تحریک لبیک پاکستان کے کارکنوں نے ایک بار پھر فیض آباد انٹر چینج پر دھرنا دے رکھا ہے۔

پولیس کی بھاری نفری دھرنے کی جگہ پر پہنچ گئی ہے جبکہ رینجرز بھی پولیس کی معاونت کے لیے موجود ہے۔ ضلعی انتظامیہ اور دھرنے کے شرکاء کے درمیان مذاکرات جاری ہیں۔

ذرائع کے مطابق ضلعی انتظامیہ نے فیصلہ کیا کہ دھرنے کے شرکاء کو کسی صورت میں بھی اسلام آباد میں داخل نہیں ہونے دیں گے۔ 

شمس آباد روڈ پر پولیس نے کنٹینرز لگا کر ٹریفک اور پیدل چلنے والے افراد کا داخلہ بھی بند کر دیا گیا۔ 

راولپنڈی سے اسلام آباد میں داخل ہونے والے تمام راستوں پر کنٹینرز موجود ہیں جبکہ جڑواں شہروں کے لوگوں کو اس وجہ سے آمد و رفت میں مشکلات درپیش ہیں۔