2019میں مہنگائی کی شرح 7فیصد تک پہنچ جانے کا خدشہ

2019میں مہنگائی کی شرح 7فیصد تک پہنچ جانے کا خدشہ

اسلام آباد: سال 2018کے انتخابات سے پاکستان میں معاشی اصلاحات کا تسلسل متاثر جبکہ تعمیراتی منصوبوں میں سست روی ترقی کی شرح کو کم کرسکتی ہے،ورلڈ بینک نے جنوبی ایشیاِئی ممالک پر رپورٹ جاری کردی۔


ورلڈ بینک نے"گلوبلائزیشن" کے فوائد کے حوالے سے جنوبی ایشیائی ممالک پرایک رپورٹ جاری کی ہے،رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ پاکستان میں معاشی ترقی کی شرح 5 اعشاریہ 2 فیصد رہنے امکان ہے جبکہ توانائی کی قیمتیں بڑھ جانے سے مالی سال 2019تک مہنگائی کی شرح 7فیصد تک پہنچ جانے کا خدشہ ہے۔

ورلڈ بینک کا کہنا ہے کہ پاک چین اقتصادی راہداری منصوبے کی بدولت تعمیراتی سرگرمیوں اور بجلی کی پیداوار میں اضافہ ہوگا جس سے صنعتی ترقی کی شرح بڑھے گی مگر دیر پا ترقی اور غربت میں کمی کے لئے نجی شعبے کو طویل مددتی سرمایا کاری کرنا ہوگی،ورلڈ بینک کا کہنا ہے کہ سال 2018میں ہونے والے انتخابات پاکستان میں معاشی ترقی کا تسلسل متاثر کرسکتے ہیں جبکہ تعمیراتی منصوبوں میں سست روی ترقی کی شرح کو کم کرسکتی ہے۔

رپورٹ میں خدشہ ظاہر کیا گیا ہے کہ برطانیہ کی یورپ سے علیحدگی سے پاکستان کی برآمدات گھٹ سکتی ہے جبکہ خام تیل کی کم قیمتوں کے باعث عرب ممالک سے ترسیلات زر میں بھی کمی واقع ہوسکتی ہے،ورلڈ بینک کے مطابق مالی سال 2017میں مالیاتی خسارہ اشاریہ 3فیصد سے بڑھ کر 4اعشاریہ 8فیصد جبکہ جاری کھاتوں کا خسارہ ملکی مجموعی پیداوار کے 2 اعشاریہ 2 فیصد رہنے کا خدشہ ہے۔