صوفوں اور قالینوں میں استعمال ہونے والے خطرناک کیمیکلز انسان میں تھائیرائیڈ کینسر کا باعث بنتے ہیں

صوفوں اور قالینوں میں استعمال ہونے والے خطرناک کیمیکلز انسان میں تھائیرائیڈ کینسر کا باعث بنتے ہیں

صوفوں اور قالینوں میں استعمال ہونے والے خطرناک کیمیکلز انسان میں تھائیرائیڈ کینسر کا باعث بنتے ہیں

لندن: آج کل آتشزدگی سے بچانے والے ’فائرپروف‘ صوفے اور قالین بہت مقبول ہو رہے ہیں لیکن اب سائنسدانوں نے ان کے متعلق انتہائی سنگین تنبیہ جاری کر دی ہے۔سائنسدانوں نے تحقیق کے بعد بتایا ہے کہ ’ان صوفوں اور قالینوں میں استعمال ہونے والے خطرناک کیمیکلز انسان میں تھائیرائیڈ کینسر کا باعث بنتے ہیں۔ تحقیقاتی نتائج کے مطابق ان کیمیکلز کی زد میں آنے والے شخص میں اس کینسر کا شکار ہونے کے امکانات 74فیصد بڑھ جاتے ہیں۔


ڈوک یونیورسٹی کے سائنسدانوں نے تھائیرائیڈ کینسر کے مریضوں کے خون کے نمونے اور ان کے گھروں سے گرد حاصل کرکے ان کا تجزیہ کیا ہے۔ نتائج میں انہوں نے لکھا ہے کہ ”ان میں سے اکثر مریضوں میں ’پولی برومینیٹڈ ڈیفینائل ایتھرز (Polybrominated diphenyl ethers)کی موجودگی کا انکشاف ہوا ہے۔ یہ وہ خطرناک کیمیکل ہے جو فائرپروف صوفوں اور قالینوں میں استعمال کیا جاتا ہے۔ ان مریضوں کے گھروں سے حاصل کی گئی گرد میں بھی یہ مادہ موجود تھا۔‘

تحقیقاتی ٹیم کی رکن ڈاکٹر ہیتھر سٹیپیلٹن کا کہنا تھا کہ ”مریضوں کے خون کے نمونوں اور گھر سے حاصل کی گئی گرد میں ٹی سی ای پی نامی کیمیکل بھی موجود تھا۔ یہ کیمیکل بھی فائرپروف فرنیچر میں استعمال کیا جاتا ہے۔ یہ کیمیکلز گھرکے اندر موجود گرد میں شامل ہو کر ہمارے تمام جسم اور اشیائے خورونوش میں شامل ہو جاتے ہیں۔ ان سے بالخصوص بچے بہت زیادہ متاثر ہوتے ہیں کیونکہ ان کا مدافعتی نظام اس کے خلاف مناسب مدافعت نہیں کر پاتا۔“رپورٹ کے مطابق اس کیمیکل کی حامل فرنیچر کی اشیاءپر برطانیہ میں 2004ءمیں پابندی عائد کی جا چکی ہے لیکن تاحال ان کا استعمال جاری ہے۔