جاپانی کمپنیوں نے لکڑی کی گاڑیاں بنانے پر غور شروع کردیا

جاپانی کمپنیوں نے لکڑی کی گاڑیاں بنانے پر غور شروع کردیا

ٹوکیو: جاپان میں چند کمپنیوں نے لکڑی کی گاڑیاں بنانے کے بارے میں غور شروع کردیا ہے۔

سعودی ذرائع ابلاغ کے مطابق دنیا بھر میں کارسازوں سے مطالبہ کیا جارہا ہے کہ وہ وزنی گاڑیوں کے بجائے ہلکی گاڑیاں تیار کریں جس کے بعد جاپانی محققین کا کہنا ہے کہ کاروں کے پرزے تیار کرنے والو ں کا کہناہے کہ لکڑی کے برادے سے جو کاریں تیار کی جائیں گی وہ سٹیل کے مقابلے میں 20فیصد ہلکی اور 5  گنا زیادہ مضبوط  ہونگی۔ برادے سے بننے والا میٹریل جو سیلیلوس نینو فائبر کہلائے گا آنے والے عشروں میں سٹیل کی جگہ استعمال کیا جاسکے گا جبکہ طیار ے بنانے میں بھی استعمال کیا جاسکتا ہے۔

ماہرین اس وقت نینو فائبر کے اس نئے میٹریل سے ایک کار بنانے میں مصروف ہیں جو  2020ء تک مکمل ہو  گی۔ کیوٹو یونیورسٹی کے ریسرچر بڑے اداروں کے ساتھ مل کر نینو فائبر میں پلاسٹک کی آمیزش کرکے اسے مزید مضبوط بنانا چاہتے ہیں۔ لکڑی کو ایک مائیکرون (ایک ملی میٹر کے ہزارویں حصے ) میں توڑا جائیگا اور پھر جو کچھ برآمد ہوگا وہ انتہائی مضبوط اور پائیدار ہوگا۔ یہی نینو فائبر روشنائی اور شفاف چیزیں بنانے میں بھی استعمال ہوتا ہے لیکن پہلی بار اسے کار سازی میں استعمال کیا جائیگا۔ اسے بڑے پیمانے پر تیار کیا جائے تو 2.2پاونڈ نینو فائبر کی قیمت صرف 9ڈالر پڑتی ہے۔

نیوویب ڈیسک< News Source