سکیورٹی خدشات کے باعث مزارِ قائد کو عوام کیلئے بند کر دیا گیا

سکیورٹی خدشات کے باعث مزارِ قائد کو عوام کیلئے بند کر دیا گیا

کراچی: سانحہ لعل شہباز قلندر کے بعد سکیورٹی خدشات کی پیشِ نظر مزارقائد کو عوام کے لئے بند کردیا گیا ہے۔نیو نیوز کے مطابق  انتظامیہ نے بانی پاکستان قائداعظم کے مزار کو سیکیورٹی خدشات کے باعث عوام کے لئے بند کردیا ہے اور مزار کے داخلی اور خارجی راستوں پر پولیس اور رینجرز کے اہلکار تعینات کردیئے گئے ہیں۔


دوسری جانب وزیر اعظم نواز شریف کی زیر صدارت سیہون شریف میں اجلاس ہوا۔ جس میں آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ ،وزیر خزانہ،وزیر داخلہ اور مشیر قومی سلامتی اجلاس میں شریک ہوئے ۔ اجلاس میں سانحہ سیہون ، امن و امان کی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ شہرقائد میں واقع صوفیائے کرام کے مزارات کو بھی زائرین کے لئے بند کردیا گیا تھا تاہم وفاقی وزیرداخلہ کی برہمی پر مزارات کو بند کرنے کے بجائے سیکیورٹی بڑھا دی گئی ہے۔

واضح رہے کہ گذشتہ چند دنوں سے ملک میں خود کش حملے اور دہشت گردی کے واقعات میں 100 سے زائد افراد جاں بحق اورسیکڑوں زخمی ہوچکے ہیں جب کہ سیکیورٹی فورسز نے بھی دہشت گردوں کے خلاف گھیرا تنک کرتے ہوئے 51 کو موت کے گھاٹ اتار دیا ہے۔