امیر ممالک کو غریب ممالک کے قرضوں میں نرمی کا اعلان کرنا چاہیے، وزیراعظم کا مطالبہ

امیر ممالک کو غریب ممالک کے قرضوں میں نرمی کا اعلان کرنا چاہیے، وزیراعظم کا مطالبہ
کیپشن:    امیر ممالک کو غریب ممالک کے قرضوں میں نرمی کا اعلان کرنا چاہیے، وزیراعظم کا مطالبہ سورس:   فائل فوٹو

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان نے کہا دنیا کو عالمی وبا سے نمنٹنے کے لئے متعدد چیلنجز کا سامنا ہے اور دنیا کی آبادی بہت جلد 8 ارب تک پہنچ جائے گی اور اس وقت 20ممالک غذائی قلت کا شکارہیں جبکہ زراعت انسانی بقا کیلئے بنیادی ضرورت ہے کیونکہ موجودہ صورتحال میں 10 کروڑ بچے غذائی قلت کے مسائل کا شکار ہیں۔

اٹلی میں بین الاقوامی زرعی ترقیاتی فنڈ کی گورننگ کونسل کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا مشکلات سے نمٹنے کیلئے منصوبہ بندی ناگزیر ہے اور غریب ملکوں کے لیے قرضوں میں رعایت اور نرمی کا اعلان کرنا چاہیے اور صورتحال سے نبرد آزما ہونے کے لیے اقوام عالم کو مل کر چلنا ہوگا۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ دنیا کو وبا سے نمٹنے کے دوران متعدد چیلنجز کا سامنا ہے یا تو ہم سب ختم ہو جائیں گے یا پھر مل کر چیلنجز سے کامیاب ہو کر نکلیں گے۔

خیال رہے کہ گزشتہ سال وزیراعظم نے غیر ملکی میڈیا کو دیے گئے انٹرویو میں کہا تھا کہ قرضے معاف ہونے سے عالمی وبا سے نمٹنے میں مدد ملے گی لہٰذا عالمی برادری غریب ممالک کے قرضے معاف کرنے پرغور کرے۔ پاکستان میں عالمی وبا زیادہ پھیلی تو اس سے نمٹنے کی صلاحیت اور وسائل نہیں ہیں۔

وزیراعظم عمران خان نے ایران پر سے بھی پابندیاں اٹھانے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا تھا کہ پابندیاں اٹھانے سے ایران کو عالمی وبا سے نمٹنے میں مدد ملے گی لہٰذا مشرق وسطیٰ میں وبا سے بدترین متاثر ایران پر سے پابندیاں ہٹائی جائیں۔

ان کا کہنا تھا کہ عالمی وبا سے متاثرہ غریب ممالک کیلئے قرضوں میں رعایت کی مہم شروع کی۔ غریب ممالک کو وبا کے بحران سے نکلنے کیلئے معاشی استحکام درکار ہے اور امیر ممالک کو غریب ممالک کے قرضوں میں نرمی کا اعلان کرنا چاہیے۔