دنیا سے دہشتگردی کے خاتمے کیلئے کشمیر اور فلسطین کے مسئلے کا حل ضروری ہے، راحیل شریف

مسئلہ کشمیر اور فلسطین کا حل پوری دنیا میں امن کے لیےفائدہ مند ثابت ہوگا

ڈیووس: ورلڈ کنامک فورم کے اجلاس سے خطاب میں جنرل ریٹائرڈ راحیل شریف کا کہنا تھا کہ مسئلہ کشمیر اور فلسطین کا حل پوری دنیا میں امن کے لیےفائدہ مند ثابت ہوگا۔
سوئٹزرلینڈ کےشہر ڈیووس میں دہشت گردی سے متعلق دفاعی امور کے ماہرین کے اجلاس سے خطاب میں سابق آرمی چیف کا کہنا تھا کہ دہشت گردی ایک کینسر کی شکل اختیار کرچکی ہے جبکہ دہشت گردی میں ریکروٹمنٹ اور سہولت کارسب ہی شامل ہیں۔ سب کو مل کر دہشت گردی کا مقابلہ کرنا ہوگا۔
راحیل شریف کا کہنا ہے کہ دہشت گردبڑی منصوبہ بندی سےحملہ کرتے ہیں اور یہ پوری دنیا کا مسئلہ ہے۔ انہوں نے دنیا میں امن کا فارمولہ دیتے ہوئے کہا کہ مسئلہ کشمیر اور فلسطین کا حل پوری دنیا میں امن کے لیےفائدہ مند ثابت ہوگا .پاکستان میں دہشتگردی گھنٹوں سے دنوں ، ہفتوں اور اب مہینوں میں آگئی ہے، 2016 میں دہشتگردی کو سنگل فگر میں لے آئے ،ایک ماہ میں 150دہشتگردحملوں کے بجائے ایک حملہ رہ گیا ہے۔ 

انہوں نے کہا کہ افغانستان پاکستان کا برادر ملک ہے دونوں ملکوں کا مستقبل ایک دوسرے سے جڑا ہوا ہے۔ ایسے گروہ بھی ہیں جو افغانستان میں بھی ہیں اور پاکستان میں بھی، پاکستان میں کارروائی پر یہ گروہ افغانستان چلے جاتے ہیں اور افغانستان میں کارروائی کے وقت یہ پاکستان آجاتے ہیں۔ طالبان کو شکست دینے میں پیچیدہ سرحد جیسے مسائل ہیں افغان مہاجرین کی پاکستان میں موجودگی بھی مسئلہ بنی ہوئی ہے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ دہشت گردی کے خاتمے کیلئے انٹیلی جنس شئیرنگ نہایت اہمیت کی حامل ہے۔ اجلاس میں مقررین نے راحیل شریف کی تجاویز کی بھر پور حمایت کی.