ملکی تاریخ کے سب سے بڑے مقدمے کی سماعت، سکیورٹی کے غیر معمولی انتظامات

ملکی تاریخ کے سب سے بڑے مقدمے کی سماعت، سکیورٹی کے غیر معمولی انتظامات

اسلام آباد:ملکی تاریخ کے سب سے بڑے مقدمے پانامہ کیس کا فائنل راﺅنڈ آج (پیر) سے شروع ہو رہا ہے، حکومت، اپوزیشن اور عوام کی نظریں ایک بار پھر سپریم کورٹ پر لگی ہوئی ہیں، مقدمے کی سماعت آج صبح ساڑھے9بجے شروع ہوگی، جسٹس اعجاز افضل کی سربراہی میں سپریم کورٹ کا 3رکنی بنچ مقدمے کی سماعت کرے گاجبکہ تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان، امیر جماعت اسلامی سراج الحق کے علاوہ عوامی مسلم لیگ ، پیپلز پارٹی کے وفود اور حکومتی وزرا مقدمے کی سماعت کے لئے سپریم کورٹ جائیں گے۔ کسی بھی صورت حال سے نپٹنے کے لئے سپریم کورٹ کے اطراف میں پولیس اور رینجرز کی بھاری نفری تعینات کی گئی ہے جبکہ عدالت عظمیٰ کے گرد اضافی خاردار تار یں لگا دی گئی ہیں اور سماعت کے دوران ریڈ زون کو بھی سیل کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔


تفصیلات کے مطابق پانامہ ہنگامے کے فائنل اور فیصلہ کن راﺅنڈ میں جے آئی ٹی کی جانب سے سپریم کورٹ میں جمع کرانے کے بعد عدالت عظمیٰ میں پہلی سماعت آج ہوگی۔جسٹس اعجاز افضل کی سربراہی میں سپریم کورٹ کا 3رکنی بنچ کیس کی سماعت کرے گا جب کہ دیگر ارکان میں جسٹس شیخ عظمت سعید اور جسٹس اعجاز الاحسن شامل ہوں گے۔ سماعت کے موقع پر اپوزیشن اور حکومت نے مکمل تیاری کر لی ہے۔ چیئرمین تحریک انصاف عمران خان، جماعت اسلامی کے امیر سراج الحق، عوامی مسلم لیگ کے شیخ رشید سمیت سیاسی جماعتوں کے وفود اور حکومتی وزرا سپریم کورٹ میں موجود رہیں گے۔

پانامہ کیس کی سماعت کے موقع پر سپریم کورٹ اور ریڈ زون میں سیکورٹی کے غیر معمولی انتظامات کئے گئے ہیں، ریڈزوں ، سپریم کورٹ میں غیر متعلقہ افراد کا داخلہ بند ہوگا جبکہ میڈیا کے نمائندوں کو بھی کارڈ دکھا کر سپریم کورٹ میں جانے کی اجازت ہوگی۔ پولیس کے700کے قریب اہلکار تعینات ہوں گے جبکہ رینجرز کی نفری بھی موقع پر موجود ہوگی۔پولیس کی اضافی نفری تھانہ سیکرٹریٹ اور تھانہ آبپارہ میں سٹینڈ بائی رہے گی۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق خواجہ حارث کی سربراہی میں شریف خاندان کے وکلاءکی ٹیم جے آئی ٹی رپورٹ کو چیلنج کرنے کے لئے درخواست دائر کرے گی۔

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں.