’ہم نے سنا تھا کہ 90 دن میں سب ٹھیک کر لیں گے‘

’ہم نے سنا تھا کہ 90 دن میں سب ٹھیک کر لیں گے‘
سورس: فوٹو: بشکریہ ٹوئٹر

لاہور: پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر حمزہ شہباز نے کہا ہے کہ ہم نے سنا تھا کہ 90 دن میں سب ٹھیک کر لیں گے لیکن حکومت کو تین سال ہونے کو آئے ہیں اور ملکی معیشت تباہ ہو گئی ہے۔ 

تفصیلات کے مطابق پنجاب اسمبلی میں بجٹ پر تقریر کرتے ہوئے حمزہ شہباز نے کہا کہ اب ہمارا حق بنتا ہے کہ حکومت کی تین سالہ کارکردگی کا جائزہ لیا جائے، میں حکومت کی کارکردگی کے حوالے سے ڈیٹا عوام کے سامنے پیش کروں گا، پھر عوام فیصلہ کریں گے کہ کارکردگی کیسی تھی۔ 

انہوں نے کہا کہ ہمیں ایک دوسرے کا موقف سننے کا حوصلہ پیدا کرنا چاہئے، غریب آدمی دیکھتا ہے لاکھوں ووٹ لے کر اسمبلیوں میں پہنچنے والے وہاں کیا کرتے ہیں، ہم کوشش کریں گے بجٹ سیشن کو اچھا بنائیں، اور ایسی روایات چھوڑ جائیں جو آنے والے ممبران کیلئے مشعل راہ ہوں۔ 

حمزہ شہباز کا کہنا تھا کہ ہم نے کالی پٹیاں باندھ کر حلف لیا تھا اور جمہوریت کو توانا کرنے کیلئے خاموش رہے تھے۔ عمران خان نے کہا تھا خودکشی کرلوں گا لیکن انٹرنیشنل مانیٹرنگ فنڈ (آئی ایم ایف) کے پاس نہیں جاؤں گا، مگر پھر آخر میں آئی ایم ایف کے گھٹنوں کو ہاتھ لگا کر سخت شرائط پر قرضہ لے کر آئے اور اب یہ لوگ آئی ایم ایف کے گن گاتے نظر آتے ہیں۔ 

حمزہ شہباز نے کہا کہ انہوں نے تین سالوں میں تین وزیر خزانہ بنائے، ہم نے گروتھ ریٹ لیا، آئی ایم ایف کا پروگرام بھی پورا کیا، ملک چلانے کیلئے قرضہ لینا پڑتا ہے مگر انہوں نے قرضے کو گالی بنا دیا اور پھر خود بھی قرضہ لیا، ہم نے قرضہ لے کر عوام کو سہولیات دیں۔

پنجاب اسمبلی میں قائد حزب اختلاف شہباز شریف کا کہنا تھا کہ حکومت ایک طرف کہتی ہے ٹیکس فری بجٹ دیا ہے، دوسری جانب کہتے ہیں پٹرولیم مصنوعات پر لیوی بڑھائی جائے گی، بجٹ کے دوسرے روز ہی پٹرول مہنگا کر دیا گیا۔