کرپشن اور جرائم میں ملوث سندھ پولیس کے 19 افسران برطرف، 130 جبری ریٹائر

کراچی: سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں سندھ پولیس افسران کے کریمنل ریکارڈ سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی جس دوران آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ نے اپنی رپورٹ عدالت میں پیش کی۔ رپورٹ کے مطابق کرپشن اور دیگر جرائم میں ملوث 130 پولیس افسران و اہلکاروں کو جبری ریٹائر کیا گیا جب کہ 19 پولیس افسران کو نوکری سے برطرف بھی کیا گیا۔

آئی جی سندھ کی رپورٹ کے مطابق کرپشن اور دیگر جرائم میں ملوث اے ایس آئی سے لے کر انسپکٹر رینک تک کے افسران کو نوکری سے برطرف اور اسی رینک کے افسران کو جبری ریٹائر بھی کیا گیا ہے۔

اے ڈی خواجہ نے رپورٹ میں کہا ہے کہ عدالت کو یقین دلاتا ہوں کسی کے ساتھ امتیازی سلوک نہیں کیا جائے گا۔ یاد رہے کہ آئی جی سندھ اور سیکریٹری داخلہ نے گزشتہ روز عدالت میں رپورٹ جمع کرائی تھی جس میں سندھ پولیس کے 17 سے 18 گریڈ تک افسران کی کرپشن اور دیگر جرائم میں ملوث ہونے کی نشاندہی کی گئی تھی۔

 

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں