متحدہ عرب امارات نے ریٹائرمنٹ کے بعد تارکین وطن کیلئے اقامہ کا قانون منظور کرلیا

متحدہ عرب امارات نے ریٹائرمنٹ کے بعد تارکین وطن کیلئے اقامہ کا قانون منظور کرلیا
تصویر بشکریہ سوشل میڈیا

ابوظہبی:متحدہ عرب امارات کی کابینہ نے ریٹائر ہونے کے بعدتارکین وطن کو طویل المیعاد اقامہ جاری کرنے کا نیا قانون منظور کرلیا۔ سرکاری صنعتی اداروں میں بجلی نرخ بھی کم کردیئے۔


امارات کے نائب صدر شیخ محمد بن راشد آل مکتوم نے واضح کیا کہ ہمارے ملک نے صنعت کو فروغ دینے کیلئے نیا پروگرام شروع کیا ہے۔ ہم چاہتے ہیں کہ عالمی صنعتوں کے نقشے پر امارات کا نام پرکشش ریاست کے طورپر متعارف ہو۔ اسی پالیسی کو آگے بڑھاتے ہوئے فیکٹریوں کےلئے بجلی کا نیا نرخنامہ جاری کیا گیا ہے۔

عملدرآمد سال رواں کی آخری سہ ماہی سے ہوگا۔ بڑی فیکٹریوں کا بجلی بل 29فیصد ، چھوٹے اور درمیانے درجے کے کارخانوں کا بجلی بل 10تا 22فیصد کم ہوگا جبکہ نئی فیکٹریوں کے لئے بجلی لائن فیس ختم کردی گئی۔ اماراتی کابینہ نے سول مقدمات ایک دن میں طے کرنے کا نظام بھی جاری کردیا۔

55برس سے اوپر کے افراد کو طویل المیعاد اقامہ ویزا جاری کرنے کی بھی منظوری دیدی گئی۔ اسکے تحت 5برس تک کا اقامہ دیا جائیگا۔ ریٹائر تارکین جن کی عمریں 55برس یا اس سے زیادہ ہوں انہیں مخصوص شرائط کے مطابق اقامے میں توسیع دی جائیگی۔

ایک شرط یہ ہے کہ ریٹائر غیر ملکی 10لاکھ اماراتی درہم کسی جائداد میں لگائے ہوئے ہو یا کم از کم 10 لاکھ درہم کا بیلنس اسکے پاس ہو یا وہ ماہانہ 20ہزار درہم کی آمدنی کا ثبوت فراہم کردے۔ اس پر عمل درآمد 2019 کے اوائل سے ہوگا۔