کورونا نے جنوبی ایشیا کا رخ کرلیا،بھارت سب سے زیادہ متاثر

کورونا نے جنوبی ایشیا کا رخ کرلیا،بھارت سب سے زیادہ متاثر
کیپشن:   کورونا نے جنوبی ایشیا کا رخ کرلیا،بھارت سب سے زیادہ متاثر سورس:   file

پیرس: دنیا بھرمیں کورونا سے جاں بحق ہونےوالوں کی تعداد 30لاکھ سے تجاوز کرگئی جو کہ جمائکا یا آرمینیا کی کل آبادی اورعراق ایران جنگ میں ہونیوالی ہلاکتوں سے 3گنازیادہ ہے۔کورونا کے زیادہ کیسز جنوبی ایشیائی ممالک میں رپورٹ ہو رہے ہیں جبکہ یورپ میں ویکسی نیشن کے بعد کیسز میں کچھ کمی آ رہی ہے۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق ویکسین مہم کے باوجود کیسز کی تعداد میں بھی ایک بار پھر تیزی سے اضافہ ہونے لگا ہے اور کیسز کی مجموعی تعداد 14 کروڑ تک پہنچ گئی ہے۔

 کورونا کی بے قابو ہوتی نئی لہر کو دیکھتے ہوئے بھارت جیسے ملک میں نئے لاک ڈائون نافذ کیے جارہے ہیں۔ گزشتہ ہفتے کے دوران ایک اندازے کےمطابق یومیہ 12ہزار اموات رپورٹ ہوئیں۔وبا میں کمی کے کوئی آثار نظر نہیں آرہے۔

ا ب تک کے ریکارڈ یومیہ 8لاکھ 30ہزار کے قریب مریض رپورٹ ہوئے۔ گزشتہ ہفتے کے دوران ایک اندازے کےمطابق یومیہ 7 لاکھ 31 ہزار کیسز سامنے آئے تھے۔

دوسری جانب بھارت میں 2 لاکھ 34ہزار نئے کیسز رپورٹ ہونے اور ایک ہزار 341 ہلاکتوں کے بعد نئی دہلی میں لاک نیا لاک ڈائون نافذ کردیاگیا۔ بھارت میں اس وقت وباء سے سب سے زیادہ متاثر ترین ملک امریکا سے بھی 3 گنا زیادہ کیسز رپورٹ ہورہے ہیں۔

 غیرملکی خبررساں ادارے کےمطابق جنوبی ایشیائی ممالک میں کورونا زور پکڑ رہا ہے بھارت میں مسلسل 2 لاکھ سے زائد کیسز رپورٹ ہورہے ہیں جبکہ پاکستان اور بنگلہ دیش میں نئے لاک ڈائون نافذ کیے جارہے ہیں۔

ادھر ترقی یافتہ ممالک میں جہاں ویکسی نیشن تیزی سے جاری ہے وہاں کورونا کی وبا کچھ کنٹرول میں نظر آرہی ہے جیسا کہ برطانیہ میں اب ایک روز میں 30 اموات رپورٹ ہوئیں جو کہ جنوری کے آخر میں 1200تھی۔