راﺅ انوار کو ملک بھر میں رشتے داروں سے ملاقات کی اجازت دیدی گئی

راﺅ انوار کو ملک بھر میں رشتے داروں سے ملاقات کی اجازت دیدی گئی
فائل فوٹو

کراچی: شہر قائد میں مبینہ پولیس مقابلے میں قتل ہونے والے نقیب اللہ محسودکے کیس میں سابق ایس ایس پی ملیرراؤانورکو عدالت نے ملک بھرمیں اپنے رشتے داروں سے ملاقات کے لیے جانے کی اجازت دے دی۔


تفصیلات کے مطابق کراچی کی انسداد دہشتگردی کی عدالت میں نقیب اللہ قتل کیس کی سماعت ہوئی۔ جس دوران راؤانوارنے اہلخانہ سے شہرسے باہرملنے کے لئے درخواست دائر کی اور موقف اختیار کیا کہ اہلخانہ دبئی سے عیدالاضحیٰ منانے آرہے ہیں لیکن سکیورٹی رسک کے باعث اپنے اہلخانہ کے ساتھ کراچی میں عید نہیں منا سکتا، عید گزارنے کے لئے  شہر سے باہر جانے کی اجازت دی جائے۔

وکیلِ صفائی صلاح الدین پنہور نے راو¿ انوار کی درخواست پر اعتراض اٹھایا کہ عدالت پرعدم اعتماد اور مقدمے کی منتقلی کی درخواست زیر سماعت ہے، اس لئے عدالت اس درخواست پر فیصلہ جاری نہیں کرسکتی۔

عدالت نے فریقین کے دلائل سننے کے بعد راو¿ انوار کی درخواست منظور کرلی، عدالت نے حکم دیا کہ ملزم اہلخانہ سے ملنے کے لئے شہرسے باہر جاسکتے ہیں لیکن ملک سے باہرنہیں۔خیال رہے کہ کہ عدالت نے سابق ایس ایس پی راو¿ انوارپرشہر سے باہر جانے پر پابندی لگا رکھی تھی۔