ٹرین سے اسٹیٹ بینک کے 50 لاکھ روپے چوری

ٹرین سے اسٹیٹ بینک کے 50 لاکھ روپے چوری
کیپشن:   ٹرین سے اسٹیٹ بینک کے 50 لاکھ روپے چوری سورس:   فائل فوٹو

بہاولپور: سمہ سٹہ ریلوے پولیس نے سازو سامان لے جانی والی ٹرین سے اسٹیٹ بینک آف پاکستان (ایس بی پی) کے 50 لاکھ روپے کے کرنسی نوٹ لاپتہ ہونے کے چند روز بعد نامعلوم ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کرلیا۔

یہ مقدمہ پاکستان سیکیورٹی پرنٹنگ پریس (پی ایس پی پی)، کراچی کے ملازم تنویر حسین کی شکایت پر پاکستان پینل کوڈ کی دفعہ 380 کے تحت درج کیا گیا ہے۔ یہ رقم 10 فروری کی رات کو سمہ سٹہ ریلوے اسٹیشن پر پی ایس پی پی کے لاک کیے گئے نقدی کے باکسز سے مبینہ طور پر چوری کی گئی تھی۔

ٹرین 501-اپ میں اسٹیٹ بینک کے لاکھوں روپے کی کھیپ اور پرائز بانڈز پر مشتمل متعدد نقدی باکسز کراچی سے فیصل آباد جارہے تھے۔ پولیس اہلکاروں کے سخت حفاظتی اقدامات کے باوجود چور نے سمہ سٹہ ریلوے یارڈ پر ویگن کو کھولنے اور دو باکسز کھولنے میں کامیاب ہوگئے۔

شکایت کنندہ نے الزام لگایا کہ جب فیصل آباد میں آف لوڈنگ کی گئی تو نقدی رقم کی جانچ پڑتال کی گئی جس میں 50 لاکھ روپے غائب تھے۔ انہوں نے بتایا کہ اس واقعہ کی رات جب ٹرین سمہ سٹہ ریلوے یارڈ پر کھڑی تھی، صبح 4 بجے نامعلوم موٹرسائیکل سوار کنٹرول روم سے نمودار ہوا تھا اور انہیں اس شخص پر شبہ ہے۔

انہوں نے بتایا کہ سمہ سٹہ پولیس کے اہلکار صدیق اور اللہ رکھا کی اس رقم کی حفاظت کرنے کی ذمہ داری تھی۔اسٹیشن ہاؤس آفیسر ملک فیاض نے کہا کہ فرسٹ انفارمیشن رپورٹ (ایف آئی آر) کی بنیاد پر تفتیش شروع کی جائے گی اور چوری کے ذمہ دار عہدیداروں کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔