بھارت،سینکڑوں مسلمان لڑکیوں کو جبراََ ہندو بنائے جانے کا انکشاف

نئی دہلی :بھارت کی ریاست اتر پردیش میں سیکڑوں کی تعداد میں مسلمان لڑکیوں کو اغوا کرنے کے بعد جبراََ ہندو بنائے جانے کا اہم انکشاف ہوا ہے۔ ان تمام مسلمان لڑکیوں کو زبردستی ہندو بنا کر شادیا ں ہندو نوجوانوں سے کروا دی گئی ہیں، ہندوستان کی حکمران جماعت بی جے پی مسلمانوں کی دشمنی تمام حدین پار کر گئی ہے
ریاست اترپردیش میں سیکڑوں مسلمان لڑکیوں کو اغوا کرکے جبری ہندو بنائے جانے کا انکشاف ہوا ہے۔ بی جے پی کے رکن پارلیمنٹ یوگی ادتیہ ناتھ کی سرپرستی میں ہندو یووا واہنی نامی تنظیم اس گھناونے عمل میں ملوث ہے۔اب تک سیکڑوں مغوی مسلمان لڑکیوں کو زبردستی ہندو بناکر شادیاں کرادی گئی ہیں۔ یو پی کے صرف ایک ضلع میں دو ہزار چودہ سے اکتوبر دو ہزار سولہ کے دوران کمسن مسلمان لڑکیوں کے اغوا اور لاپتہ ہونے کے چار سو کے لگ بھگ کیس رپورٹ ہوئے ہیں مگر ابھی تک ان اغوا شدہ لڑکیوں کو کوئی علم نہیں ہو سکا بی جے پی کی حکومت بھی اس سلسلے میں کوئی مدد نہیں کر رہی۔